جائیداد کی خرید و فروخت کا معاہدہ ’لیرا‘ میں طے کیا جائے، اردوگان bans foreign currency
The news is by your side.

Advertisement

جائیداد کی خرید و فروخت کا معاہدہ ترک کرنسی میں طے کیا جائے، اردوگان

انقرہ : ترک صدر طیب اردوگان نے حکم جاری ہے کہ ترکی میں جائیداد کی خرید فروخت کے معاہدے ’لیرا‘ میں طے کیے جائیں، ترکی میں موجود غیر ملکی شہری بھی ترک کرنسی کا استعمال کریں۔

تفصیلات کے مطابق ترکی کے صدر طیب اردوگان نے امریکی پابندیوں کے بعد تجارت و سامان کی خرید و فروخت مقامی کرنسی لیرا میں کرنے کا حکم دے چکے تھے، تاہم صدر اردوگان  نے گذشتہ روز ایک حکم جاری کیا ہے جس کے تحت جائیداد کی خرید و فروخت بھی لیرا میں کرنے کا حکم دیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے ترک صدر کی جانب سے جاری ہونے والے حکم نامے کے بعد غیر ملکی کرنسی میں ہونے والے جائیداد کے معاہدوں کو ایک ماہ کے دوران ترک کرنسی ’لیرا‘ میں منتقل کرنے کا کہا گیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق صدارتی بیان میں رئیل اسٹیٹ اور جائیداد کی خرید و فروخت کرنے والے ڈیلروں کو مذکورہ حکم پر پابندی سے عمل کرنے کا کہا گیا ہے اور ساتھ ساتھ کرائے پر دئیے جانے والے فلیٹ و مکانات کے معاہدے بھی لیرا میں کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ طیب اردوگان نے غیر ملکی شہریوں کو بھی ترکی میں لیرا استعمال کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ ترکی میں جائیداد کی خرید و فروخت یا مکانات کرائے پر دینے کے معاہدے عموماً غیر ملکی کرنسی میں طے کے جاتے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کا کہنا ہے کہ امریکی پابندیوں کے باعث ترک کرنسی لیرا کی قدر ڈالر کے مقابلے میں 40 فیصد نیچے گرچکی ہے جس نے ترکی کی معیشت کو شدید نقصان پہنچایا ہے، اس لیے طیب اردوگان لیرا کی قدر کو بحال کرنے کی کوششیں کررہے ہیں اور مذکورہ اقدامات بھی اسی کوشش کا حصّہ ہے۔

خیال رہے کہ امریکا اور ترکی کے درمیان تعلقات انتہائی کشیدہ ہیں، اس کی وجہ ترکی میں ایک امریکی پادری کی گرفتاری بنی تھی، جسے اپنے خلاف دہشت گردی کے الزامات کا سامنا ہے، ٹرمپ انتظامیہ کا مطالبہ ہے کہ اس پادری کو رہاکیا جائے۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 10 اگست کو یہ اعلان کیا تھا کہ وہ ترکی سے امریکا میں دھاتوں اور دھاتی مصنوعات کی درآمدات پر عائد کردہ محصولات کو دوگنا کر رہے ہیں، جس کے بعد ترک کرنسی لیرا کی قدر میں ریکارڈ کمی واقع ہوئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں