The news is by your side.

یورپ کی نصف سے زائد آبادی کے لیے چند ہفتوں میں بری خبر

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے خبردار کیا ہے کہ چند ہفتوں میں یورپ کی نصف سے زائد آبادی اومیکرون ویرینٹ سے متاثر ہو سکتی ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے مطابق یورپ، روس اور وسطی ایشیا کی نصف سے زائد آبادی اگلے چھ سے آٹھ ہفتوں میں کرونا وائرس کی متغیر قسم اومیکرون سے متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

ریجنل ڈائریکٹر برائے یورپ ہانس کلُوگے نے منگل کے روز ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ اومیکرون مغربی یورپ میں سب سے متعدی متغیر قسم کے طور پر غلبہ پا رہا ہے، اور بلقان خطے میں بھی پھیل رہا ہے۔

ہانس کلوگے کا کہنا تھا کہ اس صورت حال میں ویکسینز ہی متاثرین کو شدید بیمار پڑنے سے بچا سکتی ہیں، اور موت کا خطرہ کم ہو سکتا ہے۔ ڈبلیو ایچ او کی جانب سے یورپی ممالک کو ویکسینیشن کا عمل تیز کرنے کی ایک بار پھر اپیل کی گئی ہے۔

تاہم دوسری طرف گزشتہ روز منگل کو یورپی یونین کے ادویات کے نگراں ادارے نے کہا ہے کہ اومیکرون ویرینٹ کا پھیلاؤ کووِڈ 19 وبا کو ایک مقامی بیماری تک محدود رہنے کی طرف دھکیل رہا ہے، جس کے ساتھ انسانیت زندہ رہ سکتی ہے، حالاں کہ یہ ابھی تک ایک وبائی بیماری ہی ہے۔

واضح رہے کہ یوروپی میڈیسن ایجنسی (ای ایم اے) نے بھی عام آبادی کو چوتھی ویکسین شاٹ دینے کے بارے میں شکوک و شبہات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بار بار بوسٹر دینا کوئی ‘پائیدار’ حکمت عملی نہیں ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں