The news is by your side.

Advertisement

ایرانی اقدامات کے بعد جوہری ڈیل خطرے میں پڑ گیا، یورپی یونین کو شدید تشویش

برسلز: یورپی یونین نے ایرانی اقدامات کے ردعمل میں شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ایران کو ضرر رساں حکمت عملی سے گریز رہنے کی اپیل کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق یورپی یونین نے ایران کو خبردار کیا ہے کہ وہ جوہری ڈیل سے متعلق ضرر رساں اقدامات سے گریز کرے، بصورت دیگر سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ایران کی جانب سے یورینیم کی طے شدید حد سے تجاوز کرنے پر یورپی یونین مشترکہ کمیشن بنانے پر غور کررہی ہے جو معاملے کا بغور جائزہ لے گی۔

یورپی یونین کا کہنا ہے کہ ہمیں ایران کے یورینیم کو 3.67 فی صد سے بالائی سطح تک افزودہ کرنے کے اعلان پر گہری تشویش لاحق ہے۔

ای یو نے ایران سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ عالمی طاقتوں کے درمیان طے پانے والے جوہری معاہدے کی پاسداری کرے، اور سمجھوتے کے تقاضو کے منافی تمام اقدامات روک دے اور اس ضمن میں حالیہ اعلانات بھی واپس لے۔

دوسری جانب فرانسیسی صدر نے جوہری معاہدے سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایران 15 جولائی کو جوہری معاہدے میں شامل تمام فریقین کے درمیان مذاکرات کے لیے حالات سازگار بنانے کے لئے اقدامات کرے۔

ایران کا یورینیم افزودگی میں اضافہ خطرناک ہوگا‘فرانسیسی صدر

خیال رہے کہ ایران اور عالمی طاقتوں میں طے پائے معاہدے کے تحت ایران کو بھاری پانی کا ذخیرہ محدود کرنے کا پابند بنایا گیا تھا مگر ایران بھاری پانی کا ذخیرہ بھی 5 فی صد سے بڑھا چکا ہے۔

یورینیم افزودگی کی مقدار 5 فی صد تک لے جانے کا ایرانی فیصلہ سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کی بھی کھلی خلاف ورزی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں