The news is by your side.

Advertisement

امریکی پابندیاں، ایران کے ساتھ تجارت کیلئے یورپ کا متبادل نظام ناکام

برسلز: امریکا کی جانب سے ایران پر اقتصادی پابندیوں کے ردعمل میں یورپ کا ایران کے ساتھ متبادل تجارتی نظام ناکام ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی دباؤ کے سامنے فرانس، جرمنی اور برطانیہ کو ایرانی جوہری معاہدہ بچانے میں بڑی دشواریوں کا سامنا ہے۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق اس امر کا انکشاف فرانسیسی جریدے کی رپورٹ میں کیا گیا۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایران کے ساتھ تجارت کے لیے متبادل یورپی مالیاتی نظام اب تک کسی بھی تجارتی لین دین پر عمل درآمد سے قاصر رہا ہے۔

واشنگٹن کی جانب سے تہران پر دوبارہ پابندیاں عائد کرنے کے اعلان کے جواب میں فرانس، جرمنی اور برطانیہ نے رواں سال 31 جنوری کو I انسٹیکس کا نظام بنایا تھا۔

یہ ایک متبادل میکانزم ہے جو یورپی کمپنیوں کو تہران کے ساتھ تجارت جاری رکھنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔ اس طرح ایران سامان کی درآمد اور خدمات کے حصول کو ممکن بنا سکتا ہے بالخصوص تیل کی فروخت جس پر امریکا نے پابندی عائد کر دی ہے۔

البتہ اس نظام کے بننے کے چار ماہ بعد بھی یہ ابھی تک کام نہیں کر رہا۔ فرانس کے معیشت کے وزیر برونو لو مائر نے ایران کی جانب سے دی گئی دو ماہ کی مہلت کے حوالے سے کہا کہ ہم کسی بھی صورت اس وارننگ کو قبول نہیں کریں گے۔

اقتصادی جنگ میں ایرانی قوم دشمنوں کو پشیمان کردے گی: ایرانی صدر

ہم کسی وارننگ کے آگے نہیں جھکیں گے۔ یہ اب ایران پر منحصر ہے کہ وہ اس میکانزم اور نظام کو کامیاب بنانے کے لیے ہماری مدد کرے۔ ایران کی معیشت کساد کا شکار ہے۔ توقع ہے کہ رواں سال ایران کی مجموعی مقامی پیداوار میں کم از کم 6% کی کمی واقع ہو گی۔ گزشتہ سال 2018 میں یہ تناسب 3.9% رہا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں