The news is by your side.

Advertisement

جرمنی میں گرمی کی شدت کا 72 سالہ ریکارڈ گیا، درجہ حرارت 40 ہوگیا

پیرس/برلن/برسلز : پورے یورپ میں گرمی کی شدید لہر،جرمنی، فرانس اور بیلجیم میں بھی 70سال بعد درجہ حرارت حد سے زیادہ  بڑھ گیا۔

تفصیلات کے مطابق جرمنی، فرانس، سوئٹزرلینڈ اور بیلجیم سمیت پورے یورپ کو اس وقت گرمی کی ایک شدید لہر کا سامنا ہے، آئندہ چند روز میں اکثر یورپی ممالک میں درجہ حرارت انتہائی زیادہ ہو جانے کی پیش گوئی کی گئی ہے۔

فرانسیسی محکمہ موسمیات نے کہا کہ زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت چالیس ڈگری سینٹی گریڈ یا ایک سو چار ڈگری فارن ہائیٹ تک پہنچ سکتا ہے۔

سہارا کے ریگستانوں سے آنے والی گرمی کی شدید لہر کے باعث فرانس میں بچوں کے امتحانات بھی منسوخ کر دیے گئے ہیں۔

پیرس میں حکام نے بتایا کہ جون کے مہینے میں یورپ میں اتنی زیادہ گرمی خلاف معمول ہے، جو گزشتہ سات عشروں میں کبھی دیکھنے میں نہیں آئی تھی۔ جرمنی میں بھی آج( بدھ کو)درجہ حرارت چالیس ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ جائے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اس سے قبل جون میں جرمنی میں زیادہ سے زیادہ ٹمپریچر1947میں ریکارڈ کیا گیا تھا، جو اڑتیس اعشاریہ دو ڈگری سینٹی گریڈ تھا۔

ماہرین موسمیات کا کہنا ہے کہ فرانس، جرمنی، سوئٹزرلینڈ اور بیلجئیم میں جون کے ماہ میں گرمی کے نئے ریکارڈ بنیں گے اور ان کے مطابق آئندہ دنوں میں گرمی کی شدت میں مزید اضافہ ہو گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں