The news is by your side.

Advertisement

ایون فیلڈ ریفرنس : نوازشریف کے وکیل کی ڈی جی آپریشنز نیب سے جرح مکمل

اسلام آباد : احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس میں ڈی جی آپریشنز نیب ظاہرشاہ پر خواجہ حارث کی جرح مکمل ہوگئی، اس دوران نوازشریف کے وکیل اور نیب پراسیکیوٹر کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق شریف خاندان کیخلاف ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت نیب کورٹ میں ہوئی، کیس کی سماعت جج محمد بشیر نے کی، اس موقع پر ڈی جی آپریشنز نیب ظاہرشاہ نے اپنا بیان قلمبند کرایا، گواہ نے لندن فلیٹس کی ٹائٹل رجسٹری کی آفیشل کاپیاں، پانی کے بل اور کونسل ٹیکس ریکارڈ بھی جمع کرا دیا۔

سماعت کے دوران گواہ ظاہر شاہ والیوم 10کے حوالے سے آگاہ کر رہے تھے، ان کا کہنا تھا کہ والیوم 10کے متعلقہ حصے کو دیکھا ،اس میں دو قسم کے ایم ایل تھے ،،والیوم 10کے اندر تمام ایم ایل تھے ،والیوم 10میں درج نہیں کہ کس ایم ایل کا جواب آچکا اور کس کا نہیں ،ایون فیلڈ پراپرٹی کا جواب نہیں آیا۔

ظاہر شاہ نے کہا کہ برطانوی سنٹرل اتھارٹی کو ہر ماہ یاد دہانی کرا رہے تھے لیکن اس کیس کا ایم ایل نہیں بھیجا گیا بلکہ دیگر کیسز کے ایم ایل موصول ہوئے، اس پر نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے کہا کہ میں اس کیس کی بات کر رہا ہوں جس پر ظاہر شاہ نے کہا کہ اس کیس کا ایم ایل نہیں بھیجا۔

یہ بات سن کر خواجہ حارث نے تالیاں بجاتے ہوئے طنزیہ انداز میں کہا واہ واہ ۔ جس پر نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ خواجہ حارث کورٹ میں جرح کررہے ہیں یا قوالی؟ یہ کونسا طریقہ ہے کورٹ کے سامنے تالی بجانا۔

اس کے بعد جج محمد بشیر نے خواجہ حارث سے کہا کہ آپ چائے کا وقفہ کر لیں لیکن خواجہ حارث نے کہا کہ میں چائے نہیں پیتا ۔جج محمد بشیر نے کہا کہ آج سماعت رات آٹھ بجے تک چلے گی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں