The news is by your side.

Advertisement

کرونا سے تحفظ، ٹی بی ویکسین کی افادیت کا بڑا ثبوت مل گیا

بی سی جی ویکسی نیشن والے ممالک میں کرونا کے کیسز کی شرح 10 لاکھ میں سے صرف 38 رہی

ڈبلن: نئے اور مہلک وائرس کو وِڈ نائنٹین کے علاج میں تپ دق (ٹی بی) کی ویکسین بی سی جی کی افادیت سے متعلق ایک بڑا ثبوت سامنے آیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ٹی بی (ٹیوبر کولوسز) سے بچاؤ فراہم کرنے والی ویکسین BCG سے متعلق زیادہ اہم ثبوت سامنے آیا ہے کہ یہ کرونا وائرس سے بچاؤ بھی فراہم کر سکتی ہے، اس سلسلے میں کئی ممالک میں ویکسین نے کرونا سے شرح اموات میں واضح کمی کا ثبوت فراہم کر دیا ہے۔

آئرلینڈ کے ایک میڈیکل کنسلٹنٹ نے امریکی ریاست ٹیکسس کے شہر ہیوسٹن کی یونی ورسٹی کے ماہرین وبائی امراض کے ساتھ مل کر اس سلسلے میں ایک تحقیق کی، اس کے لیے آئرلینڈ سمیت متعدد ممالک میں بی سی جی ویکسی نیشن پروگرام کے نتائج دیکھے گئے۔ جن ممالک میں ٹی بی ویکسین پروگرام چلایا گیا وہاں دیگر ممالک کے برعکس کرونا وائرس کیسز قابل ذکر حد تک کم تھے۔

کرونا وائرس کا توڑ، آسٹریلیا میں ڈاکٹرز پر ٹی بی ویکسین کی آزمائش

تحقیق کے نتائج کے مطابق بی سی جی ویکسین پروگرام والے ممالک میں کرونا سے شرح اموات دیگر ممالک کے مقابلے میں 20 گنا کم رہی، آئرلینڈ کے اسپتال کے محقق یورولوجسٹ پال ہیگارٹی نے میڈیا کو بتایا کہ یہ تحقیق شماریات پر مبنی ہے اس لیے اس میں پیچیدگیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے، تاہم یہ تحقیق اس سے قبل نیویارک میں کی گئی تحقیق کے مقابلے میں کہیں زیادہ جامع ہے۔

تحقیق کے دوران غلطی کی گنجایش کم سے کم کرنے کے لیے محققین نے وبا کے دوران کیسز کا بار بار جائزہ لیا، اور ممالک کا آپس میں تقابلی جائزہ بھی لیا جاتا رہا، جن میں آئرلینڈ اور برطانیہ کے مابین تقابلی جائزہ بھی شامل ہے۔ محقق پال ہیگارٹی نے بتایا کہ انھیں اتنے نمایاں فرق کی توقع نہیں تھی، جن ممالک میں بی سی جی ویکسی نیشن کی گئی تھی ان میں کرونا کے کیسز کی شرح 10 لاکھ میں سے 38 تھی، جن ممالک میں ٹی بی ویکسی نیشن نہیں کی گئی تھی ان میں شرح دس لاکھ میں 358 کیسز تھی۔

بی سی جی پروگرام والے ممالک میں کرونا وائرس سے شرح اموات 10 لاکھ میں سے 4.28 تھی جب کہ اس کے برعکس ممالک میں دس لاکھ میں سے 40 تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں