The news is by your side.

Advertisement

دھماکے: کابل ایئر پورٹ پر سابق برطانوی فوجی بھی 200 جانوروں کے ساتھ موجود تھا

کابل: کابل ایئرپورٹ پر بائیڈن کی دو گھنٹے قبل شرائط میں تبدیلی سابق برطانوی فوجی اور ان کے 200 جانوروں کے لیے دہشت ناک ثابت ہو گئی۔

جمعرات کو جب کابل ایئر پورٹ پر داعش کا خود کش حملہ آور افغان شہریوں اور امریکی فوجیوں کو نشانہ بنا رہا تھا تو اس وقت ایئر پورٹ پر ایک سابق برطانوی فوجی پین فارتھنگ بھی اپنے 200 جانوروں سمیت وہاں‌ موجود تھے، اور افغانستان سے نکلنے کے لیے جدوجہد کر رہے تھے۔

سابق برطانوی فوجی معجزاتی طور پر کابل ایئر پورٹ پر ہونے والے دھماکوں سے بال بال بچا، اگر ان کو گیٹ پر نہ روک لیا جاتا تو وہ دھماکوں کا نشانہ بن سکتے تھے، برطانوی میڈیا کے مطابق 52 سالہ پین فارتھنگ نے کابل میں آوارہ کتے بلیوں کے لیے نوزاد کے نام سے ایک پناہ گاہ بنا رکھی تھی، جنھیں وہ ساتھ لے کر افغانستان سے نکلنا چاہ رہے تھے۔

حملے والے دن وہ اپنے تمام جانوروں اور عملے کے ہمراہ جب حامد کرزئی انٹرنیشنل ایئر پورٹ پہچنے تو انھیں گیٹ پر بتایا گیا کہ محض 2 گھنٹے قبل ہی امریکی صدر جو بائیڈن نے سفری دستاویزات کے معیار میں کوئی تبدیلی کی ہے، اور ان کی دستاویز اس کے مطابق نہیں ہیں، اس لیے ان کو درست کروا کے پھر آئیں۔

پین فارتھنگ جانوروں اور ساتھیوں سمیت واپس مڑے ہی تھے کہ ایئر پورٹ پر قیامت طاری ہو گئی، اس حملے میں 170 افراد ہلاک ہوئے، جن میں 13 امریکی فوجی بھی شامل تھے۔

کابل ایئر پورٹ پر ایک اور حملے کا خدشہ

واقعے کے روز پین نے طالبان ترجمان سہیل شاہین کو بھی ایک ٹویٹ کے ذریعے مخاطب کرتے ہوئے مدد مانگی، اور لکھا ڈیئر سر، میں میری ٹیم اور جانور کابل ایئر پورٹ پر پھنس گئے ہیں، ہم فلائٹ کا انتظار کر رہے ہیں، کیا آپ ایئرپورٹ  کے اندر جانے کے لیے ہمیں محفوظ راستہ فراہم کر سکتے ہیں۔

پین فارتھنگ نے کابل سے نکلنے کے لیے ایک چارٹرڈ طیارہ منگوایا تھا، پین فارتھنگ نے اپنی ٹویٹ میں لکھا ’میں، میری ساری ٹیم جانوروں سمیت سب ایئر پورٹ کی حدود کے اندر پہنچ چکے تھے، تب ہم کو یہ کہتے ہوئے لوٹا دیا گیا کہ دو گھنٹے قبل ہی امریکی صدر کی انتظامیہ نے سفری دستاویزات کے ضوابط میں تبدیلیاں کی ہیں، اور پھر دھماکوں کی تباہی دیکھنے کو ملی۔‘

نوزاد نامی چیریٹی ادارے کے بانی فارتھنگ نے ایک نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا یہ بہت خوف ناک منظر تھا، میں کچھ نہیں کر سکتا تھا، مجھے وہاں کے لوگوں نے کہا کہ وہاں سے نکل جاؤں، کیوں کہ یہ ایسا موقع نہیں تھا جہاں کسی غیر ملکی کو خوش آمدید کہا جائے۔

فارتھنگ نے کہا مجھے اسٹاف نے کہا کہ جتنے زیادہ جانور لے جا سکتے ہیں، لے جائیں، میرا مقصد ان کو افغانستان سے نکالنا تھا، جو امریکی صدر کی وجہ سے پورا نہ ہو سکا۔

واضح رہے کہ پین فارتھنگ بعد ازاں ایک نجی جیٹ طیارے کے ذریعے 94 کتوں اور 79 بلیوں کے ساتھ ازبکستان کے شہر تاشقند پہنچے، جہاں سے وہ برطانیہ جائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں