The news is by your side.

اسپتال کی کھدائی سے کیا برآمد ہوا ؟ دیکھنے والے دنگ رہ گئے

ممبئی : بھارت کے ایک سرکاری اسپتال کے اندر کھدائی کے دوران ایسی قدیم دریافت ہوئی دیکھنے والے دنگ رہ گئے، محکمہ آثار قدیمہ کے افسران نے بھی حیرت کا اظہار کیا۔

اس حوالے سے بھارتی میڈیا کی شائع کردہ رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست مہاراشٹرا کے شہر ممبئی کے ایک پرانے سرکاری اسپتال کے احاطے میں ایک قدیمی سرنگ کا انکشاف ہوا ہے۔

بھارتی حکوم نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ سر جے جے اسپتال کے احاطے میں برطانوی دور اقتدار میں تعمیر کی گئی 132 سال پرانی سرنگ دریافت ہوئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق اسپتال کی ڈین ڈاکٹر پلاوی ساپلے نے میڈیا کو بتایا کہ تقریباً 200 میٹر لمبی سرنگ کا سنگ بنیاد 1890 میں رکھا گیا ہوگا کیونکہ اس کی دیوار پر اس کی تاریخ بھی درج ہے۔

انہوں نے کہا کہ بدھ کے روز اسپتال کے ایک رہائشی میڈیکل آفیسر ارون راٹھوڈ معمول کے مطابق گشت پر تھے کہ اس دوران ان کی نظر نرسنگ کالج کی دیوار کے قریب ایک سوراخ پر پڑی جس کو مزید کھودنے پر سرنگ دریافت ہوئی۔

انہوں نے میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ جس عمارت کے نیچے اینٹوں کی دیواروں والی سرنگ دریافت ہوئی ہے وہ ماضی میں ​​سر ڈی ایم پیٹ ہسپتال برائے خواتین اور بچوں کا تھا، جسے مارچ 1892 میں بائیکلہ کے وسیع و عریض اسپتال کیمپس میں تعمیر گیا تھا۔

ڈاکٹر پلاوی ساپلے نے مزید بتایا کہ یہ عمارت فی الوقت ایک نرسنگ کالج میں تبدیل ہوگئی ہے، نیز چند برسوں قبل بھی اس عمارت میں ایک سرنگ کی قیاس آرائیاں کی جا رہی تھیں لیکن اسے تلاش کرنے کے لیے کوئی سرکاری ریکارڈ یا نقشہ موجود نہیں ہے۔

سرکاری ریکارڈ کے مطابق ایک پارسی مخیر شخص سر جے جے کے قطعہ اراضی اور ان کی جانب سے کیے گئے عطیہ کے سببب مذکورہ اسپتال کی بنیاد 3 جنوری 1843 کو رکھی گئی تھی، نیز اب اس سرنگ کی دریافت پر پتھر پر جس تاریخ کا اندارج ہے اس پر 1890 تحریر کیا گیا ہے جو اس بات کی نشاندہی کرتی ہے کہ سرنگ کی تعمیر بعد میں عمل میں آئی۔

اسپتال کے حکام نے مزید تحقیقات کے لیے ممبئی کے کلکٹریٹ اور آثار قدیمہ کے محکموں کو تمام تفصیلات فراہم کی ہے جس سے مزید معلومات حاصل ہونا متوقع ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں