The news is by your side.

Advertisement

ماحولیاتی آلودگی کے خلاف احتجاج، مظاہرین نے لندن اسٹاک ایکسچینج بند کردیا

لندن : برطانوی دارالحکومت میں ماحولیاتی آلودگی کے خلاف احتجاج کرنے والے ایکسٹنشن باغیوں (سوشل موؤمنٹ) نے لندن اسٹاک ایکسچینج کا راستہ بند کردیا۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی دارالحکومت لندن میں موسمیاتی تبدیلی کےلیے کام کرنے والے رضاکاروں نے دنیا میں پیدا ہونے والی موسمیاتی تبدیلی کے حوالے شہریوں میں شعور اجاگر کرنے اور مقتدر اداروں کے خلاف اقدامات نہ کرنے پر گزشتہ کئی روز سے شدید احتجاج کررہے ہیں۔

برطانوی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ مظاہرین (ایکسٹنشن باغی) نے لندن شہر کے فنانشنل سینٹر سمیت کئی اداروں کو بند کردیا تھا جبکہ مظاہرین کا ایک گروپ ریلوے اسٹیشن میں داخل ہوگئے اور بینر لیکر ٹرین کی چھت پر چڑھ گئے۔

مقامی میڈیا کا کہنا تھا کہ دونوں جہگوں سے مظاہرین کو منتشر کردیا ہے لیکن پولیس کو پورا دن چوکنا رہنے کی ہدایات جاری کی گئیں۔

خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ پولیس 15 اپریل سے اب تک 1 ہزار مظاہرین کو گرفتار کرچکی ہیں۔ ایکسٹنشن باغیوں کی جانب سے اس سے قبل پارلیمنٹ اسکوائر اور واٹر لو پُل کو بند کیا ہوا تھا۔

مزید پڑھیں : ماحولیاتی تبدیلیوں کے خلاف احتجاج، معروف اولمپیئن ایٹیئن اسٹاٹ گرفتار

یہ بھی پڑھیں : موحولیاتی آلودگی، برطانوی پولیس نے احتجاج کی علامت کشتی کے ساتھ کیا کیا

خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ایکسٹنشن باغیوں کے 13 افراد پر مشتمل گروپ نے اسٹاک ایکسچینج بند کیا، مظاہرین نے پلے کارڈ ہاتھ میں اٹھا رکھے تھے جس میں ’ہم پیسے نہیں کھا سکتے‘، ’سچ بتاؤُ جیسے نعرے درج تھے جبکہ اسٹاک ایکسچینج کا راستہ بند کرنے والے مظاہرین نے سیاہ رنگ کا سوٹ زیب تن کیا ہوا تھا اور سر پر خاص علامت کا ہیلمٹ پہنا ہوا تھا اور گلے میں ایل سی ڈی لٹکائی ہوئی تھی جس میں ’کلائمٹ ایمرجنسی‘ کے الفاظ تحریر تھے۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ حکام نے مظاہرین نے نمٹنے کےلیے 10 ہزار پولیس اہلکاروں کو احتجاجوں کی جگہ پر تعینات کردیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں