The news is by your side.

Advertisement

سخت سردی نے چائے کی پیالی توڑ دی، ویڈیو وائرل

یخ بستہ ہواؤں نے یورپی ممالک کو منجمد کردیا، موبائل فون اور دیگر ڈیوائسز نے کام کرنا چھوڑ دیا۔

لندن : یورپی ممالک میں شدید سردی کے باعث نظام زندگی مفلوج ہوکر رہ گیا، شمالی اٹلانٹک سے آنے والی سرد ہواؤں نے یورپ اور برطانیہ کو منجمد کردیا۔

برمنگھم اور دیگر علاقوں میں برف باری کے باعث روز مرہ کے معمولات اور سرگرمیاں ختم ہوکر رہ گئی ہیں۔ یورپ کے بیشتر علاقوں میں اس وقت بہت زیادہ سردی پڑ رہی ہے اور وہاں کے کچھ علاقوں میں درجہ حرارت 48.0 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا ہے۔

شہریوں کے گھروں میں محصور ہونے سے شاہراہوں اور مارکیٹوں میں سناٹا چھا گیا ہے، حکومت کی جانب سے لوگوں کو شدید سردی اور برفباری میں احتیاط برتنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

اس حوالے سے سوشل میڈیا پر جاری ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ جیسے ہی ایک شخص نے گرم چائے سے بھری پیالی کھڑکی سے باہر نکالی وہ باہر آتے ہی ٹوٹ گئی۔

روس میں دنیا کا سرد ترین گاﺅں موجود ہے جہاں درجہ حرارت منفی 71.2 ڈگری سینٹی گریڈ تک گر جاتا ہے، اس گاﺅں کا نام اومیاکون ہے، وہاں سردی کا یہ عالم ہے کہ اتنی زیادہ سردی کے باعث موبائل فون اور اس طرح کی دیگر ڈیوائسز کام کرنا چھوڑ دیتی ہیں۔

اس کے علاوہ مزے کی بات یہ ہے کہ واش روم بھی گھروں سے باہر قاقئم ہیں اور اس سے بھی حیران کن بات یہ ہے کہ اگر کوئی شخص فوت ہوجائے تو اس کی آخری رسومات میں بھی تین دن لگ جاتے ہیں۔

یہاں جنوری کا اوسط درجہ حرارت منفی 50 ڈگری سینٹی گریڈ رہتا ہے، اس گاﺅں کو ’پول آف کولڈ‘ بھی کہا جاتا ہے کیونکہ یہ انسانی آبادی والا سب سے سرد ترین علاقہ ہے۔

مقامی لوگ گاڑیوں کے دوبارہ اسٹارٹ نہ ہونے کے خدشے کے پیش نظر سارا دن دوڑاتے رہتے ہیں جبکہ گاﺅں کی آبادی تقریباً 500افراد پر مشتمل ہے۔

دوسری جانب یورپ کے کئی ممالک میں سردی کی تازہ لہر ریکارڈ توڑنے لگی ہے، گزشتہ روز اٹلی میں برف باری کے بعد سڑکیں اور مکانات نے سفید چادر اوڑھ لی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں