The news is by your side.

Advertisement

فیس بک استعمال کرنے سے قبل بچوں‌ کے لیے بڑی شرط

سڈنی: آسٹریلیا میں اب فیس بک کے استعمال کے لیے بچوں کو والدین کی اجازت ضروری ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا میں ایک مجوزہ قانون کے تحت 16 سال سے کم عمر بچوں کو فیس بک اور انسٹاگرام میں لاگ ان ہونے کے لیے اپنے والدین کی اجازت درکار ہوگی۔

اس قانون کا اطلاق فیس بک، انسٹاگرام، ریڈٹ، اونلی فینز، بومبل، واٹس ایپ اور زوم پر بھی ہوگا، ان تمام کمپنیوں کو صارفین کی عمر کا درست تعین کرنے اور والدین کی اجازت کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھانے ہوں گے۔

واضح رہے کہ آسٹریلیا میں پہلے ہی فیس بک اور انسٹاگرام استعمال کرنے کے لیے 13 سال سے زائد عمر ہونا ضروری ہے اور عمر کا صحیح تعین کرنے کے لیے مذکورہ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز مصنوعی ذہانت کا استعمال کر رہے ہیں۔

قانون کی خلاف ورزی کرنے پر سوشل میڈیا کمپنیوں پر آسٹریلیا میں 20 لاکھ ڈالر جرمانہ عائد کیا جاتا ہے اور اب جرمانے کو بڑھا کر ایک کروڑ ڈالر کیا جا رہا ہے۔

نئے قانون کا مقصد رضا مندی کے بغیر بچوں کو معلومات دینے کو روکنا ہے۔

مجوزہ قانون میں کہا گیا ہے کہ آن لائن پلیٹ فارمز کے رازداری کے موجودہ طریقے بچوں اور کمزور افراد کے لیے نقصان دہ ہو سکتے ہیں، بشمول اشتہاری مقاصد کے لیے ڈیٹا شیئر کرنا یا نقصان دہ ٹریکنگ، پروفائلنگ یا ٹارگٹڈ مارکیٹنگ۔

اس قانون کے تحت دیگر بڑے آن لائن آپریٹرز جیسا کہ ایمازون، گوگل اور ایپل کے لیے بھی نئے اصول بنائے جائیں گے، جن کے 25 لاکھ سے زیادہ آسٹریلوی صارفین ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں