The news is by your side.

Advertisement

فیس بک ذہنی دباؤ کی وجہ قرار، تحقیق

سڈنی: آسٹریلیا کے طبی ماہرین کا دعویٰ ہے کہ فیس بک استعمال کرنے والے صارفین ذہنی دباؤ کے باعث دماغی بیماریوں میں مبتلا ہوتے جارہے ہیں، اگر پانچ روز فیس بک استعمال نہ کی جائے تو ذہنی دباؤ سے نجات حاصل کی جاسکتی ہے۔

یونیورسٹی آف کوئنزلینڈ میں ماہرین نے نوجوانوں میں بڑھتے ہوئے ذہنی دباؤ اور بیماریوں کا مشاہدہ کرنے کے لیے مطالعاتی تحقیق کی جس کے دوران یہ انکشاف سامنے آیا کہ سوشل میڈیا کی وجہ سے نوجوان بڑی تعداد میں دماغی امراض کی طرف جارہے ہیں۔

مطالعے میں ماہرین نے جب یہ نتیجہ دیکھا تو انہوں نے تحقیق میں چند نوجوانوں کو شامل کیا اور اُن کے پانچ روز کے لیے سوشل میڈیا اکاؤنٹ خصوصاً فیس بک کو بند کردیا۔

محققین کے مطابق مشاہدے کے دوران دو گروپس بنائے گئے جن میں سے ایک کو پانچ روز کے لیے فیس بک استعمال نہ کرنے کی تاکید کی گئی جبکہ دوسرے گروپ کو معمول کے مطابق سوشل میڈیا کے استعمال کی اجازت دی گئی۔

اس دوران یہ بات سامنے آئی کہ جن لوگوں نے پانچ روز فیس بک استعمال نہیں کیا اُن کے دماغی ہارمونز کی سطح میں دباؤ کی سطح کم رہی جس کی سب سے اہم وجہ ذاتی معلومات کا محفوظ رہنا تھا۔

تحقیق میں شامل کیے گئے تمام لوگوں کے لعاب (تھوک) کا نمونہ تجربہ شروع ہونے سے پہلے اور ختم ہونے کے بعد لیا گیا، نتائج سامنے آنے پر یہ بات سامنے آئی کہ جن لوگوں نے 5 روز فیس بک استعمال نہیں کیا اُن کے کوالیسٹرول کی سطح کم ہوئی اور ذہبی دباؤ بھی کم ہوا۔

محقق کاروں نے متنبہ کیا ہے کہ صرف فیس بک نہیں بلکہ دیگر سوشل میڈیا ویب سائٹس کے استعمال سے بھی صارفین دماغی بیماریوں میں مبتلا ہوسکتے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں