The news is by your side.

Advertisement

‘فیس بک’ سے غلطی ہوئی: مارک زکربرگ کا اعتراف

سان فرانسسکو: فیس بک کے بانی مارک زکربرگ نے تشدد آمیز پوسٹ کو تاخیر سے ہٹانے کی غلطی کا اعتراف کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی پولیس کی جانب سے جیکب بلیک کو گولی مارنے کے بعد ہونے والے پرتشدد مظاہروں کے ایک ہفتے بعد فیس بک کے سی ای او نے ملیشیا گروپ کے صفحے کو تاخیر سے ہٹانے کی غلطی قبول کر لی۔

مارک زکر برگ نے کہا کہ جیکب بلیک کو گولی مارنے کے بعد پرتشدد مظاہروں کا آغاز ہوا جس کے بعد ملیشیا گروپ کے ایک پیج کے ذریعے لوگوں کو ورغلایا گیا۔

انہوں نے اس غلطی پر معذرت نہیں کی اور کہا کہ ابھی تک فیس بک کو کوئی ثبوت نہیں ملا ہے کہ کینوشا گارڈ کے صفحے یا اس مسلح ملیشیا کے اراکین کی جانب سے عوام کو تشدد کے لیے بھڑکایا گیا۔

مارک زکر برگ نے فیس بک پر شیر کی گئی ایک ویڈیو میں کہا کہ کیونوشا گارڈ کے صفحے نے فیس بک کی پالیسیوں کی خلاف ورزی کی تھی اور اسے بہت سے لوگوں نے لائک کیا تھا۔

خیال رہے کہ فیس بک نے حالیہ ہفتوں میں ان گروپوں کی پوسٹوں کو ہٹانے یا اس پر پابندی لگانے کے لیے نئے رہنما خطوط اختیار کیے ہیں جن سے عوام میں تشویش بڑھ گئی ہے۔

سوشل میڈیا کے بڑے ادارے نے اعتراف کیا ہے کہ رواں سال نومبر میں ہونے والے امریکی صدارتی انتخابات کے دوران بھی فیس بک کا غلط استعمال ہوسکتا ہے جس کے لیے احتیاط برتنے کی تیاری ضروری ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں