بلاول بھٹو زرداری کے بارے میں 7 حیران کردینے والے انکشافات -
The news is by your side.

Advertisement

بلاول بھٹو زرداری کے بارے میں 7 حیران کردینے والے انکشافات

آج پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین بلاول بھٹوزرداری اپنی 28 ویں سالگرہ منارہے ہیں‘ انہوں نے 2014 میں پیپلز پارٹی کی باگ ڈورباقاعدہ طریقے سےاپنے ہاتھ میں لی۔

بلاول بھٹو 21 ستمبر 1988 کو کراچی میں پیدا ہوئے اور خاندانی حالات کے سبب 1999 میں اپنی والدہ کے ہمراہ ملک سے باہر چلے گئے ‘ انہوں نے اپنی تعلیم کا بیشتر حصہ ملک سے باہر مکمل کیا ہے تاہم اب وہ پاکستان کی سیاست میں پوری طرح متحرک ہیں۔

ان کے نانا ذوالفقار علی بھٹو پاکستان کی تاریخ کے اہم ترین سیاست دان تصور کیے جاتے ہیں جنہیں ملٹری ڈکٹیٹر جنر ل ضیا الحق کے دورِ حکومت میں سزائے موت دی گئی تھی۔ بلاول کی والدہ دو مرتبہ پاکستان کی وزیراعظم رہی ہیں اور انہیں کسی بھی اسلامی ملک کی پہلی خاتون وزیراعظم ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔

بلاول بھٹو زرداری کی سالگرہ پر ہم بتارہے ہیں ان کی زندگی کے کچھ ایسے گوشوں کے بارے میں جن سے آپ یقیناً آج تک ناواقف رہے ہوں گے۔


بلاول بھٹو کی ذاتی زندگی کے اہم گوشے


بلاول کی پیدائش

سن 1988 کے الیکشن 16 نومبر کو منعقد ہونا تھے اور بلاول بھٹو کی پیدائش بھی انہی دنوں متوقع تھی لہذا بینظیر بھٹو نے ڈا کٹروں سے مشاورت کرکے 21ستمبر کو یعنی الیکشن سے دو ماہ قبل کراچی کے لیڈی ڈیفرن نامی اسپتال میں قبل از وقت آپریشن کرایا جس کے نتیجے میں بلاول بھٹو زرداری پیدا ہوئے۔ اس قبل ازوقت آپریشن کے نتیجے میں بینظیر عام انتخابات میں بھرپور طریقے سے حصہ لے سکیں اور مسلم دنیا کی پہلی خاتون وزیراعظم قرار پائیں۔

bilawal-post-5
لیڈی ڈیفرن اسپتال

بلاول – نام کی وجہ تسمیہ

بلاول بھٹو کا نام سندھ کے عظیم صوفی بزرگ شاعر اور فلسفی مخدوم بلاول بن جام حسن سمو کے نام پر رکھا گیا ہے جنہیں دسویں صدی ہجری میں اس وقت کے سندھ کے ارغون حکمران نے کوہلو میں پسوا کر قتل کرادیا تھا۔ کچھ ذرائع کا کہناہے کہ بلاول کا نام زرداری قبیلے کے کسی بزرگ کے نام پر رکھا گیا ہے تاہم زیادہ ترقریبی ذرائع مخدوم بلاول سے نسبت پر متفق ہیں۔ بلاول کے معنی ہیں ’’ ایسا کہ جس کا کوئی ثانی نہ ہو‘‘۔

bilawal-post-6
مخدوم بلاول شہید کا مزار – دادو

عینک والا جن

بلاول بھٹو زرداری کا بچپن پاکستان میں گزرا اور ان کے بچپن میں پاکستان ٹیلی ویژن سے بچوں کا مقبول ترین ڈرامہ ’ عینک والا جن نشر کیا جاتا تھا جو کہ بلاول کو بہت پسند تھا۔ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ بلاول کی پسندیدگی کے سبب سرکاری ٹیلی ویژن نے عینک والا جن کی طے شدہ اقساط میں اضافہ کیا تھا کیوں کہ اس وقت ان کی والدہ بینظیر وزیراعظم تھیں۔

bilawal-post-4
عینک والا جن کا مرکزی کردار – نستور جن

بلاول ‘ تاریخ کے طالب علم نکلے

اپنے نانا اور والدہ کی طرح بلاول بھٹو زرداری نے بھی آکسفورڈ یونیورسٹی کے کرائسٹ چرچ کالج سے تعلیم حاصل کی ہے۔ انہوں نے پہلے تاریخ برطانیہ میں داخلہ لیا تھا تاہم بعد ازاں اپنا تبادلہ تاریخِ عمومی میں کروالیا۔

bilawal-post-3
آکسفورڈ یونی ورسٹی

خبردار! حملہ کرنے سے پہلے سوچ لینا

نا زو نعم میں پلنے والے بلاول بھٹو کو دیکھ کر ایسا تاثر ذہن میں آتا ہے کہ کسی جسمانی لڑائی کی صورت میں باآسانی انہیں زیر کیا جاسکتا ہے تاہم ایسا سوچنے والے کسی خوش فہمی میں نہ رہیں کیونکہ بلاول بھٹو کراٹے ’تائی کوانڈو‘ میں بلیک بیلٹ کے حامل ہیں اور یقیناً پلک چھپکنے میں کسی کی کوئی بھی ہڈی توڑنے کی مہارت رکھتے ہیں۔

bilawal-post-7
بلاول بھٹوزرداری کی کم سنی کی ایک تصویر

بلاول بھٹو کادکھ

بلاول بھٹو دیگر کھیلوں میں بھی دلچسپی ہے اور وہ کرکٹ‘ شوٹنگ اور گھڑ سواری کو بے پناہ پسند کرتے ہیں۔ انہیں ہمیشہ افسوس رہا کہ وہ اپنے خاندانی پس منظر کے سبب آزادانہ گھوم پھر نہیں سکتے جس کے سبب وہ باقاعدہ کرکٹ نہیں کھیل سکے۔

bilawal-post-2
بلاول پاکستانی کرکٹ ٹیم کی ٹی شرٹ پہنے ہوئے

بچپن میں کیا بننا چاہتے تھے

بلاول کی والدہ بینظیر بھٹو نے ایک انٹرویو کے دوران پوچھے گئے سوال کے جواب میں انکشاف کیا تھا کہ انتہائی مضبوط خاندانی سیاسی پس منظر کے باوجود بلاول سیاست داں نہیں بننا چاہتے۔ انکا کہنا تھا کہ ’’جب وقت آئے گا تو یہ خود طے کرلیں گے کہ انہیں کیا کرنا ہے ‘‘۔ واضح رہے کہ اس انٹرویو کے وقت بلاول انتہائی کم عمر تھے اورپھر حالات ایسے بدلے کہ اب ان کا شمار پاکستان کے اہم سیاستدانوں میں ہوتا ہے۔

bilawal-post-1
بلاول بھٹو زرداری کا ایک پوز

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں