The news is by your side.

Advertisement

ملازمہ پر تشدد، طاقت ور جیت گیا، کمزور ہار گیا

فیصل آباد: کم سن گھریلو ملازمہ پر میاں بیوی کے سرعام تشدد کیس میں پولیس نے دباؤ میں آ کر با اثر شخصیات کے سامنے گھٹنے ٹیک دیے، ایک بار پھر طاقت ور جیت اور کم زور ہار گیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق فیصل آباد میں ایڈن ویلی سوسائٹی میں کم سن ملازمہ پر تشدد کرنے والے میاں بیوی کے سلسلے میں پولیس نے مکمل جانب داری کا ثبوت دیتے ہوئے قواعد کی واضح خلاف ورزی کی۔

آج عدالت سے کمسن ملازمہ صدف پر تشدد کرنے والا ملزم منیر آسانی سے ضمانت پر رہا ہو گیا، کیوں کہ پولیس نے تشدد کرنے والے بااثر ملزم میاں بیوی کو مکمل قانونی ریلیف دیا تھا، چائلڈ پروٹیکشن بیورو کو اطلاع کیے بغیر ملزم کو عدالت میں پیش کیا گیا۔

اس کیس کی تازہ ترین تفصیلات یہاں پڑھیں

دوسری طرف اس کیس میں ایس ایچ او نے مقدمے میں نامزد با اثر ملزمہ ثمینہ کو گرفتار ہی نہیں کیا، ملزمہ ثمینہ اپنے شوہر منیر کی گرفتاری کے وقت بھی گھر میں موجود تھی۔

متاثرہ ملازمہ صدف کو بھی عدالت میں پیش کرنے کی بجائے اسے والدین کے حوالے کر دیا گیا، پولیس نے بہیمانہ تشدد کا شکار صدف کا میڈیکولیگل بھی نہیں کرایا، پولیس نے بچی کا بیان بھی ریکارڈ نہیں کرایا۔

واضح رہے کہ کم سن ملازمہ کو قواعد کے تحت مقدمے کے مدعی چائلڈ پروٹیکشن بیورو کی تحویل میں دیا جانا تھا۔ قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ متاثرہ بچی کا میڈیکولیگل کروایا جاتا تو ملزم کی ضمانت نہ ہوتی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں