The news is by your side.

فیض آباد دھرنا کیس ، اسلام آباد ہائیکورٹ کی راجہ ظفرالحق کمیٹی کی رپورٹ پیش کرنے کیلئےآخری مہلت

اسلام آباد : فیض آباد دھرنا کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ نے راجہ ظفرالحق کمیٹی کی رپورٹ پیش کرنے کیلئے آخری مہلت دیتے ہوئے ایک بجے تک رپورٹ پیش کرنے کا ٖحکم دیدیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے فیض آباد دھرنا کیس کی سماعت کی ، سماعت کے دوران جسٹس شوکت عزیز نے ریمارکس دیئے کہ وفاقی حکومت عدالتی احکامات پر عملدر آمد میں سنجیدہ نہیں، الیکشن ایکٹ میں ترمیم سے زیادہ مسئلہ کوئی ہے۔

راجہ ظفر الحق کمیٹی کی رپورٹ پیش نہ کرانے پر عدالت نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ عدالت مسلسل نوٹسز کررہی ہے، وفاقی حکومت احکامات کی مسلسل خلاف ورزی کررہی ہے۔

ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت سے استدعا کی کہ رپورٹ جمع کرانے کیلئے وقت دیا جائے، رپورٹ کل تک عدالت میں پیش کر دیں گے۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے حکومتی استدعا مسترد کرتے ہوئے رپورٹ جمع کرانے کی آخری مہلت دی اور حکم دیا کہ ایک بجے تک رپورٹ پیش کی جائے جبکہ رپورٹ پیش نہ ہونے کی صورت میں وزیراعظم کو ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کا حکم بھی دیا۔

جسٹس شوکت عزیز نے کہا کہ احکامات پرعملدرآمد نہ ہونے پرتوہین عدالت کی کارروائی ہوسکتی ہے اور وزیرداخلہ وقانون، دیگرذمہ داران کیخلاف توہین عدالت کارروائی ہوسکتی ہے۔

بعد ازاں اسلام آبادہائیکورٹ نے کیس کی سماعت ایک بجے تک ملتوی کردی۔


حکومت اورتحریک لبیک کے درمیان معاہدہ طے پا گیا


یاد رہے کہ ختم نبوت کے حلف نامے میں ترمیم کے معاملے پر فیض آباد انٹرچینج پر تحریک لبیک کی جانب سے 22 روز تک دھرنا دیا گیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں