گوجرانوالہ: جعلی عاملہ نے کم سن بچے کو دہکتے کوئلوں پر بٹھا دیا -
The news is by your side.

Advertisement

گوجرانوالہ: جعلی عاملہ نے کم سن بچے کو دہکتے کوئلوں پر بٹھا دیا

لاہور: صوبہ پنجاب کے شہر گوجرانوالہ میں جعلی عاملہ نے جن نکالنے کے لیے کم سن بچے کو بری طرح جلا ڈالا۔ متاثرہ بچے کو فوری طور پر زخمی حالت میں اسپتال منتقل کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق گوجرانوالہ میں جعلی عاملہ نے جن نکالنے کے بجائے بچے کو ہی جلا ڈالا۔

کھیالی کے رہائشی محنت کش کرامت حسین کا 15 سالہ بیٹا ناصر کافی عرصے سے بیمار تھا جس کے علاج معالجے کے لیے وہ کھیالی کی عاملہ یاسمین کے پاس علاج کے لیے لے گئے۔

یاسمین نے بچے میں جن کے اثرات بتائے اور کہا کہ کوئلہ جلا کر تعویذ جلائے جس کے بعد بچہ ٹھیک ہوجائے گا، مگر عاملہ نے تعویذ کے بجائے بچے کو جلتے کوئلوں پر بٹھا دیا جس سے بچے کا نچلا دھڑ بری طرح جھلس گیا۔

بچے کے والدین اسے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال لے گئے۔ بچے کے والد کرامت حسین کا کہنا ہے ان کے منع کرنے کے باوجود عاملہ نے بچے کو جلایا۔

واقعے کی اطلاع ملنے پر تھانہ کھیالی پولیس نے موقع پر پہنچ کر جعلی عاملہ یاسمین کو حراست میں لے کر واقعہ کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

واضح رہے کہ ملک بھر میں ضعیف الاعتقادی، جہالت اور کم علمی کے سبب اکثر افراد اپنے مختلف مسائل کے حل اور بیماریوں کے علاج کے لیے پیر فقیروں سے رجوع کرتے ہیں جو اکثر اوقات جعلی نکلتے ہیں۔

ان جعلی پیروں کے غیر انسانی سلوک، تشدد اور ناقص مشوروں کی وجہ سے کئی افسوسناک حادثات پیش آچکے ہیں۔

اس سے قبل صوبہ پنجاب ہی کے شہر ڈیرہ غازی خان میں جعلی پیر کے تشدد سے 34 سالہ خاتون جاں بحق ہوگئی تھی۔ جعلی پیر نے جن نکالنے کے بہانے خاتون پر شدید تشدد کیا تھا اور ہاتھ پاؤں بھی داغے۔

مقتولہ ثریا 3 بچوں کی ماں تھی۔ پولیس تاحال جعلی پیر اور اس کے چیلوں کی تلاش میں ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں