جعلی ویڈیو کی وجہ سے تین بچوں کی ماں کو طلاق -
The news is by your side.

Advertisement

جعلی ویڈیو کی وجہ سے تین بچوں کی ماں کو طلاق

نئی دہلی: بھارتی شہری نے واٹس ایپ پر ملنے والی جعلی ویڈیو کو بنیاد بنا کر اپنی بیوی پر الزام عائد کیا اور اُسے طلاق دے دی۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق 36 سالہ خاتون کے شوہر کو تین برس قبل واٹس ایپ کے نمبر پر نامعلوم نمبر سے ایک ویڈیو موصول ہوئی جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ یہ تمھاری بیوی کی فوٹیج ہے۔

شوہر نے ویڈیو دیکھتے ہی بیوی پر تشدد کیا اور پھر اُسے طلاق دے کر تینوں کمسن بچوں کو اپنے پاس رکھ لیا۔

خاتون نے علیحدگی سے قبل شوہر کو سمجھانے کی کوشش بھی کی مگر وہ ناکام رہیں جس کے بعد انہوں نے سائبر کرائم ونگ میں مقدمہ درج کرایا۔

تحقیقات کے دوران ویڈیو کی جیو فنانسنگ کی گئی جس میں یہ بات سامنے آئی کہ ویڈیو میں نظر آنے والی خاتون سوجا نہیں بلکہ کوئی اور ہیں، آخری کے چند منٹ میں مذکورہ خاتون کا منہ واضح ہے۔

سوجا کا کہنا ہے کہ ’میں نے مقدمہ جیت لیا اب میرے بچے معاشرے میں فخر سے گھوم سکتے ہیں اور لوگوں کو بتا سکتے ہیں کہ ہماری والدہ کے ساتھ بہت غلط ہوا، اب کسی میں ہمت نہیں وہ میرے اوپر الزامات عائد کرے’۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق شوبا کے خاوند ساجو جوزف بیرونِ شہر اپنی کمپنی چلا رہے ہیں، اکتوبر 2015 میں جب انہیں ویڈیو موصول ہوئی تو وہ فوری طور پر اپنے گھر آئے اور بیوی کو طلاق دے دی۔

خاتون نے اپنے شوہر کے خلاف بھی مقدمہ درج کروایا، بے گناہ ثابت ہونے کے بعد عدالت نے ساجو کو گرفتار کرنے کا حکم دیا۔

شوبا کا کہنا تھا کہ علیحدگی کے بعد کا وقت میرے لیے بہت زیادہ کٹھن تھا، میں اپنے بچوں سے ہر ہفتے عدالت میں ملنے جاتی تھیں اور جب اُن کی یاد آتی تو اسکول کے باہر کھڑے ہوکر انہیں گھر جاتا ہوا دیکھتی تھی۔

عدالت نے بچوں کو والدہ کے حوالے کرنے کا حکم دیا اور شوہر کو ہدایت کی کہ وہ تین بچوں کی معاشی ذمہ داریاں پوری کرے۔

سوجا کے شوہر اپنے کیے پر بہت زیادہ نادم ہیں انہوں نے دوران تفتیش پولیس کو بیان دیا کہ ’مجھے سے بہت بڑی غلطی ہوگئی جو میں نے بغیر تصدیق ہے اپنی ہی اہلیہ پر الزام لگایا اور اُسے بدنام کیا مگر اب وقت ہاتھ سے نکل چکا‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں