The news is by your side.

Advertisement

بہادر آباد میں کم عمر چور کی تشدد سے موت، اہل خانہ کا لاش سڑک پر رکھ کر احتجاج

ریحان بہادر آباد میں نقب زنی کی واردات میں ملوث رہا ہے، مقدمہ درج ہے: پولیس

کراچی: بہادر آباد میں گزشتہ روز کم عمر چور کی اہل علاقہ کے تشدد سے موت کے خلاف اہل خانہ نے ریحان کی لاش شاہراہ قائدین پر رکھ کر احتجاج کیا۔

تفصیلات کے مطابق بہادر آباد کراچی میں اہل علاقہ کے ہاتھوں کم عمر لڑکے کی موت پر اہل خانہ نے احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیٹے پر بد ترین تشدد کیا گیا، اگر چوری کی تھی تو پولیس کے حوالے کیا جاتا۔

شاہراہ قائدین پر لڑکے کی لاش رکھ کر احتجاج کرنے والے مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ ملزمان کے خلاف قتل اور دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا جائے۔

دوسری طرف ورثا نے لڑکے سے متعلق تفصیلات بتاتے ہوئے کہا ہے کہ مقتول 6 بہن بھائیوں میں تیسرے نمبر پر تھا، بیٹے کو گرل سے باندھ کر برہنہ کر کے تشدد کی ویڈیو بنائی گئی، بیٹا بولتا رہا والدین کو بلا دو کسی کے دل میں رحم نہیں آیا۔

یہ بھی پڑھیں:  کراچی: کم عمر مبینہ چور تشدد سے ہلاک، 2 افراد گرفتار، وزیر اعلیٰ کا نوٹس

ورثا نے مطالبہ کیا ہے کہ بیٹے کے قتل کے الزام میں گرفتار افراد کو سخت سزا دی جائے، جس طرح بیٹے کو تڑپا تڑپا کر مارا ہے ایسے ہی ملزمان کو مارا جائے۔ ورثا نے کہا کہ مارنے کے بعد ویڈیو انٹرنیٹ نیٹ پر ڈالنے کا کیا مطلب ہے، واقعے کا مقدمہ دہشت گردی کی عدالت میں چلایا جائے۔

دوسری طرف پولیس کہہ رہی ہے کہ نوجوان کی ہلاکت کے واقعے کی تحقیقات کر رہے ہیں، لڑکے کو چوری پکڑے جانے پر پولیس کے حوالے کیا جانا چاہیے تھا، کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں۔

پولیس کے مطابق تشدد سے جاں بحق ہونے والے ریحان کا کریمنل ریکارڈ موجود ہے، ریحان بہادر آباد میں نقب زنی کی واردات میں ملوث رہا ہے، اس کے خلاف نقب زنی کی واردات کا مقدمہ درج ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ریحان کے خلاف مقدمہ 27 جنوری کو درج کیا گیا تھا، ریحان سے 17 ہزار روپے، لیڈیز پرس اور موبائل فون برآمد ہوا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں