شہبازشریف کی اسمبلی میں تقریرتوہین عدالت کے زمر میں آسکتی ہے: وزیرقانون Shahbaz Sharif
The news is by your side.

Advertisement

شہبازشریف کی اسمبلی میں تقریر توہین عدالت کے زمرے میں آسکتی ہے: وزیرقانون

لاہور: وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم کا کہنا ہے کہ شہبازشریف کی اسمبلی میں تقریرتوہین عدالت کے زمر ے میں آسکتی ہے.

ان خیالات کا اظہار انھوں نے اے آر وائی کے پرواگرم دی رپورٹرز میں گفتگو کرتے ہوئے کیا. ان کا کہنا تھا کہ عدالت میں زیرسماعت کیس پربات  کرنا مناسب نہیں، یہ باتیں عدالت میں کی جانی چاہیے تھیں۔

فروغ نسیم نے کہا کہ شہبازشریف نے اسمبلی میں95 فی صد کیس ہی پر بات کی، پارلیمنٹ میں وہی ہونا چاہیے، جو قانون کہتا ہے.

انھوں نے کہا کہ نیب کو ریمانڈ میں اضافے کا اختیار ہے. نیب قانون کے تحت ملزم کو تحقیقات کے لئے گرفتار کرسکتا ہے.


مزید پڑھیں: قومی اسمبلی اجلاس ختم ہونے کے بعد نیب نے شہباز شریف کو اپنی تحویل میں لے لیا


انھوں نے کہا کہ زیرسماعت مقدمے پرکہیں اوربات کی جائے ، تو  توہین عدالت تصور ہوگی، آرٹیکل 204 کے تحت شہبازشریف کی تقریر توہین عدالت کی زد میں‌ آسکتی ہے.

ان کا مزید کہنا تھا کہ شہبازشریف معاملے پرپارلیمانی کمیٹی کامطالبہ غیرآئینی ہے، نیب کی کارروائی پرپارلیمنٹ کا کوئی عمل دخل نہیں، اسپیکرقومی اسمبلی نے پروڈکشن آرڈر جاری کرکے بہت اچھی روایت قائم کی.

فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ شہبازشریف کے بیان سے  پاکستان کے چین اورترکی سےتعلقات خراب نہیں ہوں گے،  نیب آزادادارہ ہے، وفاقی حکومت کوئی مداخلت نہیں کررہی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں