site
stats
سندھ

ڈپٹی میئر شپ کو بچانے کے لیے فاروق ستار خود میدان میں اتر گئے

farooq sattar

کراچی : ڈپٹی میئر ارشد وہرہ کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لانے کے لیے ایم کیوایم پاکستان متحرک ہو گئی ہے جس کے لیے فاروق ستار نے ضلع وسطی، شرقی اور جنوبی کے ہنگامے دورے کے لیے کمر کس لی ہے.

تفصیلات کے مطابق ڈپٹی میئر ارشد وہرہ کی پاک سرزمین پارٹی میں شمولیت ایم کیو ایم پاکستان کے لیے نئی مشکل کھڑی کردی ہے اور ایم کیو ایم اس مشکل سے نکلنے کے لیے سر توڑ کوششوں میں مصروف عمل ہے.

سربراہ ایم کیوایم پاکستان فاروق ستار نے دو مرتبہ رابطہ کمیٹی کے ہنگامی اجلاس کو ملتوی کر کے خود میدان میں اتر گئے ہیں اور ضلع وسطی، شرقی اور جنوبی کے ضعی کونسل کے اراکین کے ملنے سے کے لیے روانہ ہوچکے ہیں.

ذرائع کے مطابق سٹی کونسل کے ارکان کی جوڑ توڑ شروع ہوچکی ہے جہاں ڈپٹی میئر کی علیحدگی کے بعد وسیم اخترکی سٹی کونسل اجلاس کی صدارت لازمی ہو گی اور اجلاس کا کورم پورا کرنے کیلئے 104 ارکان کی موجودگی ضروری ہے.

 اسی سے متعلق : ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ کی پی ایس پی میں شمولیت

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ 308 کے ایوان میں ایم کیوایم پاکستان کے 204 ارکان ہیں جن میں سے 15 ارکان غیر فعال ہیں جب کہ 35 سے زائد ارکان نے ارشد وہرہ کے ذریعے پی ایس پی سے رابطہ کیا.

دوسری جانب سٹی کونسل میں اپوزیشن جماعت ارکان کو اجلاس میں شرکت سے روکنے کے لیے متحرک ہوچکی ہیں تاکہ کل ہونے والے اجلاس کا کورم پورا نہیں ہوسکے اور ڈپٹی میئر کے خلاف تحریک اعتماد نہ لاسکیں.

 یہ بھی پڑھیں : ارشد وہرہ کا ایم کیو ایم سے پی ایس پی تک کا سفر

ان اطلاعات کے بعد سربراہ ایم کیو ایم فاروق ستار بلدیاتی حکومت کو بچانے نکل پڑے اور ضلع جنوبی، شرقی اور وسطی کا ہنگامی دورہ کر کے بلدیاتی نمائندوں سے ملاقاتیں کیں اور ناراض اراکین کو منانے کی کوششیں تیز کردی ہیں.

فاروق ستار نے ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماؤں کو ہدایت جاری کی ہیں کہ کل ہونے والے اجلاس میں ہر ضلعی کونسل اور یو سی چیئرمین کی حاضری کو یقینی بنائی جائے تاکہ طےشدہ ایجنڈے پر بات کر کے ایم کیوایم اجلاس ختم کرنے کی حکمت عملی پر عمل کیا جا سکے.

یاد رہے ایم کیو ایم پاکستان سے تعلق رکھنے والے ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ نے گزشتہ روز اپنی جماعت کو خیر آباد کر کے پاک سرزمین پارٹی میں شمولیت اختیار کرلی ہے تاہم انہوں نے ڈپٹی میئر شپ سے استعفیٰ دینے کا اعلان نہیں کیا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top