The news is by your side.

فاروق ستارکی جانب سےرابطہ کمیٹی کےاراکین کوشوکازنوٹس جاری

کراچی : سربراہ ایم کیوایم پاکستان ڈاکٹر فاروق ستار نے رابطہ کمیٹی کے 33 اراکین کو شوکاز نوٹس جاری کردیئے ہیں.

تفصیلات کے مطابق تمام اراکین رابطہ کمیٹی کو شو کاز نوٹس تنظیمی نظم و ضبط کی خلاف ورزی کرنے پر جاری کیے گئے جس پر ڈاکٹر فاروق ستار کے بطور کنونیر دستخط موجود ہیں.

ذرائع کے مطابق ڈاکٹر فاروق ستار نے شوکاز نوٹس کے ذریعے سوال کیا کہ رابطہ کمیٹی اراکین نے کنونیر کی غیر موجودگی میں اجلاس کیوں طلب کیا جب کہ الیکشن کمیشن کو خط لکھنے کے معاملے کی وضاحت طلب کی گئی ہے.

شوکاز نوٹس میں یہ بھی پوچھا گیا ہے کہ پی آئی بی میں واقع فاروق ستارکے گھر سے جاتے وقت رابطہ کمیٹی نے درست زبان استعمال نہیں کی جس سے تنظیم کی ساکھ متاثر ہوئی لہذا غیر مناسب زبان استعمال کرنے پر معافی طلب کیا جائے۔

شوکاز نوٹس کے متن میں کہا گیا ہے دیئے گئے مقررہ وقت کے دوران جواب نہ دینے پر تنظیمی قواعد و ضوابط کے تحت کارروائی کی جائے گی اور ڈسپلن کی خلاف ورزی کی کسی طور اجازت نہیں دی جائے گی.

آج صبح جاری کیے گئے شوکاز نوٹس بہادر آباد میں واقع مرکزی دفتر میں رابطہ کمیٹی کے اراکین کو موصول ہوچکے ہیں جس کا جواب دینے کے لیے رابطہ کمیٹی کے درمیان صلح مشورے کا عمل جاری ہے جس کے لیے بیرسٹر فروغ نسیم سے مدد لی جائے گی۔

قبل ازیں ڈاکٹر فاروق ستار اور رابطہ کمیٹی کے درمیان ہونے والی ملاقات میں کچھ برف پگھلتی نظر آرہی ہے اور سینیٹ کی نشستوں کے لیے چار نئے ناموں کے انتخاب پر اتفاق رائے ہو گیا ہے.

خیال رہے کامران ٹیسوری کو سینیٹ کا ٹکٹ دیئے جانے پر 5 فروری سے سربراہ ایم کیوایم پاکستان فاروق ستار اور رابطہ کمیٹی کے درمیان جاری خلیج گو کم ہوتی نظر آرہی ہے لیکن تاحال کوئی حتمی نتیجہ سامنے نہیں آیا ہے.


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں