فاروق ستارکا انٹراپارٹی الیکشن کا مطالبہ، 23اگست کو ایم کیوایم کومیں نے بچایا
The news is by your side.

Advertisement

فاروق ستارکا انٹراپارٹی الیکشن کا مطالبہ، 23اگست کو ایم کیوایم کومیں نے بچایا

کراچی : ایم کیوایم پاکستان کے رہنما فاروق ستار  نے انٹراپارٹی الیکشن کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا 23اگست کو ایم کیوایم کومیں نے بچایا، ایم کیوایم پاکستان نظریاتی قائم کرنے کےمشن پرنکل چکاہوں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں ایم کیوایم پاکستان کے رہنما فاروق ستار نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہ ایم کیو ایم پاکستان میں تبدیلی آنی چاہیے، 13ستمبر کو رابطہ کمیٹی کی رکنیت سےاستعفیٰ دیا ، کہا تھا ذاتی وجوہات کی بنا پرمستعفی ہو رہا ہوں، اپنے استعفے کے پس پردہ حقائق بیان کرنے جا رہا ہوں‌۔

فاروق ستار کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم پاکستان مشکل صورتحال سے دو چار ہے، ایم کیو ایم کراچی کی سطح پر17 سے 4 قومی اسمبلی نشستوں پرآئی، آئندہ ضمنی اوربلدیاتی الیکشن کے اچھے نتائج کیلئے اقدامات کرنا ہوں گے۔

رہنما ایم کیو ایم پاکستان نے کہا پارٹی کودوبارہ جوڑنے کیلئے 5 فروری سے پہلے کی پوزیشن لانی ہوگی، کارکنوں اور ذمہ داروں کو5 فروری سے پہلے کی پوزیشن دینا ہوگی، میرا مطالبہ یا تجویز کہیں پارٹی جوڑنے کیلئے یہ اقدام ناگزیر ہے۔

فاروق ستار نے انٹراپارٹی الیکشن کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا جس قدر جلد ممکن ہوانٹراپارٹی الیکشن کرائےجائیں اور ذمہ داروں اورکارکنوں کوپارٹی میں پرانی پوزیشن واپس دی جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ میری پریس کانفرنس کے بعد بہادر آباد کے ساتھیوں کا جواب آئے گا۔ 23اگست کو ایم کیوایم کومیں نے بچایا، حادثاتی طور پر 23اگست کو پارٹی سربراہی لندن سے میں نے لی، 11فروری کو خالد مقبول اورساتھیوں نے سربراہی مجھ سے لے لی۔

ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما نے کہا 15جون کواختلافات ایک طرف رکھ کربہادرآباد ملنےگیا ، علم تھاکہ یہ الیکشن ایم کیوایم کا الیکشن نہیں ہے، میری تجویز تھی الیکشن سے گریزکرناچاہیے۔ ایک فرد نے مجھےنا قابل تلافی نقصان پہنچایا، اس پرتفصیل سےروشنی ڈالوں گا۔

فاروق ستار کا کہنا تھا کہ ایک فرد نے مجھےنا قابل تلافی نقصان پہنچایا، اس پرتفصیل سےروشنی ڈالوں گا۔ 9نومبر2017 کی پریس کانفرنس کا بدلا لیا گیا، میرا دل جلا ہوا ہے، آرمی اسٹاف کونوٹس لیناچاہیے ، میرا گناہ یہ تھا کہ پی ایس پی کے پروجیکٹ کو فیل کیا۔

انھوں نے کہا 7لاکھ کاووٹ بینک آج بھی کراچی میں ایم کیوایم کاقائم ہے، الیکشن کےبعدبھی کارکنان دربدرہیں، میں نے سیاست عزت کیلئے کی ، مالی مفاد کیلئے نہیں۔

رہنما ایم کیو ایم پاکستان کا کہنا تھا کہ کارکنوں کی عزت کیلئے میدان عمل میں اتراہوں، مجھے نظرانداز کیا گیا کسی معاملے میں مشورہ نہیں کیاگیا، کچھ نشستیں ہماری کوتاہیوں کی وجہ سے بھی گئیں ، جہاں ہارےیا ہرایاگیاوہاں کارکردگی بہترکرتے۔

انھوں نے کہا رابطہ کمیٹی میں چند افراد ہے جن پر اعتماد نہیں ہے، کچھ افرادکی سوچ کے ساتھ نہیں چل سکتا ، پارٹی میں احتساب کی بات یہ میرا قصور ہے، پنڈورا  باکس نہیں کھولنا چاہتا لیکن چند افراد کو حساب دینا ہوگا۔

فاروق ستار کا کہنا تھا کہ ایم کیوایم پاکستان نظریاتی قائم کرنے کےمشن پرنکل چکاہوں، نظریاتی قائم کرنے کیلئے ایک ایک مہاجر کے پاس جاؤں گا ، ساتھیوں کو قائل کروں گا، فریش مینڈیٹ کےعلاوہ بلدیاتی انتخابات کریں، بلدیاتی اکثریت ہم سےلینےکی تیاری کرلی گئی ہے۔

ایم کیو ایم کے رہنما نے کہا جنوبی سندھ صوبےکی تحریک کا بھرپور آغازکیا جائے، اپیل ہے عوام این اے243 پر عامر چشتی کو ووٹ دیں۔

ان کا کہنا تھا کہ گیس، بجلی کی قیمتیں بڑھنے سے مہنگائی کانیاطوفان آیاہے، آنے والےدنوں میں ڈالر200روپےکانہ ہوجائے، وزیراعظم عمران خان غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کررہےہیں ، غریبوں کو دیوارمیں چنوایاجارہا ہے،ایرانی سرکس لگاہواہے۔

فاروق ستار نے کہا حکومت کی عوام دشمن پالیسی کےخلاف آواز اٹھائیں گے، ملکی معیشت کو آئی ایم ایف کےحوالےکیاجارہاہے، صدرپاکستان سےاس معاملے پربات ہوئی ہے، ایک سرکس اسلام آبادمیں،دوسراایم کیوایم پاکستان میں لگا ہے۔

رہنما ایم کیو ایم پاکستان کا کہنا تھا کہ پاکستانی ریاست اوراس کاانتظام سنبھالنےوالےبھی بہت عزیز ہیں ، ریاستی ادارےپوچھیں کہ آپ کا اشارہ کہاں ہے تو کھل کربتاؤنگا ، ٹریبونل میں پٹیشن بھی دی اس پر مجھ سے بات کی جائے۔

انھوں  نے مزید کہا کہ کراچی کو50 دن میں کوئی پیکیج نہیں ملا،باقی 50دن گزر جائیں گے، آپ کاخزانہ خالی ہوگا تو دنیا آپ کو آکر اپنا خزانہ کیوں دے گی، خزانہ خالی ہےتوکراچی پیکیج کااعلان کہاں سےہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں