جے آئی ٹی بننی چاہیے، نیب اور کرپٹ سیاست دانوں میں میچ فکسڈ ہے، فاروق ستار farooq sattar
The news is by your side.

Advertisement

جے آئی ٹی بننی چاہیے، نیب اور کرپٹ سیاست دانوں میں میچ فکسڈ ہے، فاروق ستار

کراچی : ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا ہے کہ پاناما کیس کا فیصلہ بڑا اور تاریخی ہے تاہم معاملہ ابھی مکمل نہیں ہوا حتمی فیصلہ جے آئی ٹی کی روشنی میں مرتب ہوگا۔

ایم کیو ایم کے مرکز پر ڈاکٹر فاروق ستار نے پاناما کیس پر پریس بریفینگ میں کہا کہ سپریم کورٹ ایک ذمے دار اور آئینی ادارہ ہے ، جب ایک جے آئی ٹی بنائی گئی ہے تو اسے تسلیم کرنا چاہیے ،اگر دو ماہ کی انکوائری کی ضرورت ہے تو فریقین کو فیصلہ تسلیم کرکے جے آئی ٹی کو موقع دیں کہ وہ منطقی انجام تک اسکو پہنچائیں۔

انہوں نے کہا کہ ابھی احتساب کا عمل مکمل نہیں ہوا ، لیکن جو کچھ بھی ہو وہ انصاف اور میرٹ پر ہونا چاہیے اور شاید پرسپریم کورٹ نے تب ہی مزید تحقیقات کا حکم دیا۔


*پاناما کیس: ہرعظیم خزانے کے پیچھے کوئی جرم ہوتا ہے‘ عدالت


فاروق ستار نے کہا کہ متحدہ بھی کرپشن کے خلاف ہے اور مکمل خاتمہ چاہتے ہیں ، نیب کا ادارہ ناقص اور نااہل ادارہ ہے ملک میں اربوں کھربوں کے قرضے لے کر ہڑپ کیا گیا ، ہم روز اول سے کہے رہے ہیں کہ ارٹیکل ٹریسٹھ ون این کے تحت قرضے لینے والے اور قرضے لے کر ہڑپ کرنے والی حکومتیں بھی نااہل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے جہاں جہاں کرپشن کے الزامات ہیں انکے خلاف بھی جے آئی ٹی اور انکوائری ہونا چاہیے تاہم پہلے تو یہ طے کرنا ہے کہ ہمیں سپریم کورٹ پر اعتماد ہے یا نہیں ؟ کرپشن کے مقدمات پر ضرور جے آئی ٹی بنی چاہیے اس لیے کہ نیب اور کرپٹ سیاست دانوں کے درمیان میچ فکسڈ ہے کیوں کہ نیب بے اثر تابع اور مرعوب ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں