The news is by your side.

Advertisement

دبئی: سنگدل باپ نے بیٹی کو ڈوبنے دیا کہ کوئی مرد اسے ہاتھ نہ لگائے

دبئی: ایک 20 سالہ لڑکی کو اس کے باپ نے ساحل پر ڈوبنے دیا لیکن مرد لائف گارڈز کو اسے ہاتھ نہیں لگانے دیا۔

عرب ذرائع ابلاغ کے مطابق ایک ایشیائی النسل شخص اپنے خاندان کے ہمراہ ساحل پر آیا جہاں اس کی بیٹی ڈوبنے لگی اور مدد کے لئے پکارنے لگی، جب ریسکیو اہلکار اسکی مدد کے لئے لپکے تو لڑکی کے والد نے انہیں روک دیا جس کے سبب لڑکی کی موت واقع ہوگئی۔

دبئی پولیس کے سرچ اینڈ ریسکیو ڈیپارٹمنٹ کے ڈپٹی ڈائریکٹر احمد برقباح کا کہنا ہے کہ وہ یہ حادثہ زندگی بھر نہیں بھول سکتے۔ انہوں مزید کہاکہ ’’لڑکی کو بچایا جاسکتا تھا لیکن اس کے والد کے اس عقیدے نے کہ اگر کسی غیر مرد نے اسکی بیٹی کو ہاتھ لگالیا تو اس کی بے حرمتی ہوجائے گی اور اسی عقیدے نے لڑکی کی جان لے لی‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ لڑکی کا والد ایک لمبا تڑنگا اور طاقتور شخص تھا اس نے ریسکیو اہلکاروں کو پکڑ کر کھینچنا اور روکنا شروع کردیا ۔ والد نے ان سے کہا کہ ’’وہ ترجیح دے گا کہ اس کی بیٹی مرجائے تاآنکہ کوئی غیر مرد اسے ہاتھ لگائے‘‘۔

احمد برقباح کے مطابق لڑکی کو بچایا جاسکتا تھا اگر اس کا والد ریسکیو اہلکاروں کے کام میں مداخلت نہیں کرتا۔

انہوں نے تصدیق کی کہ لڑکی کے والد کو ریسکیو ٹیم کے کام میں مداخلت کرنے اور لڑکی جان بچانے سے روکنے کے الزام میں گرفتارکرلیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں