The news is by your side.

Advertisement

فاطمہ بھٹو نے زندگی کی 38 بہاریں دیکھ لیں

کراچی: پاکستان کے سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کی پوتی اور میر مرتضیٰ بھٹو کی صاحبزادی فاطمہ بھٹو نے زندگی کی 38 بہاریں دیکھ لیں۔

تفصیلات کے مطابق اسلامی دنیا کی پہلی خاتون وزیراعظم بے نظیر بھٹو کی بھتیجی فاطمہ بھٹو 29 مئی کو اپنی 38 ویں سالگرہ منارہی ہیں، ملک بھرسے انہیں پی پی کارکنان مبارک باد کے پیغامات دے دہے ہیں۔

فاطمہ بھٹو 29مئی1982ءکو  افغانستان کے شہر کابل میں پیدا ہوئیں انہوں نے ابتدائی تعلیم دمشق(شام) میں حاصل کی بعد ازاں مزید تعلیم کے لیے اُن کا او لیول اسکول میں داخلہ ہوا اور وہ کراچی نمتقل ہوئیں۔

فاطمہ بھٹو نے 2004 میں کولمبیا یونیورسٹی ،نیویارک سے امتیازی نمبروں کے ساتھ گریجویشن کیا۔گریجویشن میں ان کا خاص مضمون مشرق وسطیٰ میں بولی جانے والی زبانیں اور کلچرتھا۔

انہوں نے 2005ءمیں اسکول آف اورینٹل اینڈ افریقن اسٹڈیز سے”ساﺅتھ ایشین گورنمنٹ اور سیاسیات“ میں ماسٹرز کیا۔

میرمرتضیٰ بھٹو کے قتل کے وقت فاطمہ بھٹو کی عمر کم تھی جس کا اثر آج بھی اُن کی شخصیت پر نظر آتا ہے، وہ اپنی والدہ غنویٰ بھٹو کے ساتھ بیرونِ ملک منتقل ہوئیں اور اب وہیں قیام پذیر ہیں۔

انہوں نے سیاست سے کنارہ کشی اختیار کی ہوئی ہے اور مستقبل میں بھی اُن کا سیاسی میدان میں اترنے کا کوئی ارادہ نہیں، فاطمہ بھٹو کی شناخت عالمی دنیا میں ایک مصنف کی حثیثیت سے ہے۔

فاطمہ بھٹو شاعرہ اور ادیب ہیں اور وہ پاکستان ، امریکا اور برطانیہ کے مختلف اخباروں میں کالم بھی لکھتی ہیں۔1997ء میں پندرہ برس کی عمر میں فاطمہ بھٹو کا پہلا شعری مجموعہ آکسفورڈ یونیورسٹی پریس پاکستان سے شائع ہوا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں