The news is by your side.

Advertisement

اگر وزیراعظم میری بات مانیں تو ملک لوٹنے والوں کو الٹا لٹکانا چاہے، فواد چوہدری

اسلام آباد : وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے گزشتہ ادوارمیں ملک کے خزانے کو لوٹا گیا، برباد کیا گیا،  اگر وزیراعظم میری بات مانیں تو ملک لوٹنے والوں کو الٹا لٹکانا چاہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے قومی اسمبلی میں رہنما پی پی خورشید شاہ کے بیان پر درعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ ادوارمیں ملک کے خزانے کو لوٹا گیا، جس طرح پیسے مجرے میں لٹائے جاتے ہیں، ایسے بیڑہ غرق کیا۔

اسپیکر قومی اسمبلی نے فوادچوہدری کو پارلیمانی الفاظ استعمال کرنے کی ہدایت کی۔

فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ اگروزیراعظم میری بات مانیں توانھیں الٹالٹکاناچاہیے، ڈاکو کو ڈاکو نہ کہیں تو کیا کہیں، لوٹ مار کرنا پارلیمانی ہے لیکن ڈاکو کو ڈاکو
کہنا غیر پارلیمانی ہے؟

انھوں نے مزید کہا کہ اسٹیل مل، پی آئی اے سمیت دیگر اداروں کو تباہ کیا گیا، چمچوں کو اداروں میں بھرتی کیاگیا اور تنخواہیں پاکستان کےعوام دے رہے ہیں کہا جاتا ہے ناتجربہ کار لوگ آگئے، انہوں نے تیس سال میں ملک کا بیڑاغرق کردیا۔

وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ کہا جاتا ہے چندےپرملک چلارہےہیں،اس کے بعد ڈاکو کو ڈاکو نہ کہیں تو کیا کہیں، اداروں کو تباہ کردیا گیا، ریڈیو پاکستان کی صورتحال دیکھ لیں۔

فواد چوہدری نے کہا خورشیدشاہ نے پی آئی اے میں اپنے دوستوں کو بھرتی کیا، مشاہد اللہ نے برمنگھم میں پی آئی اے اسٹیشن منیجر اپنا بھائی بھرتی کرایا، ان کے خاندان میں کوئی ایسا نہیں، جس کی سرکاری نوکری نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عوام کے پاس کھانے کو کچھ نہیں اورانہوں نے ملک کو تباہ کردیاہے، کرپشن پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا۔

فوادچوہدری نے کہا کہ سعودی عرب میں 150لوگوں کو کرپشن پر پکڑا گیا، 75 لوگوں کو صبح ناشتے کے بعد الٹا لٹکایا جاتا تھا اور 75 کو رات کو، ہم چور کو چور کہیں تو انہیں برالگ جاتا ہے۔

وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ ہم صرف ملک کاسوچ رہےہیں،کوئی ناراض ہوتاہےتوبےشک ہوجائے، اسپیکر کا کام اسمبلی چلانا اور اسمبلی کا کام ملک چلاناہے، خورشیدشاہ نے 3 دن میں 300افراد پی ٹی وی میں بھرتی کرائے، ہرسال ریڈیو پاکستان کو ایک ارب 25 کروڑ روپے کا نقصان ہورہا ہے۔

انھوں نے مزید کہا نیویارک میں ٹیکسی چلانےوالے کو یہاں بلاکرریڈیو پاکستان کا ڈی جی بنادیاگیا، ٹیکسی چلانے والے کو ریڈیوپاکستان کا ڈی جی بنا کر ساڑھے 4لاکھ تنخواہ دی جارہی ہے، ایسی صورتحال ہے تو پھرمیں چورکو چورنہ کہوں توکیا کہوں۔

فوادچوہدری کے بیان پر اپوزیشن اراکین نے احتجاج کیا اور نشستوں سے کھڑے ہوکر خورشید شاہ کےقریب جمع ہوگئے لیکن بعد میں  اسپیکرقومی اسمبلی کی ہدایت پر واپس اپنی نشستوں پربیٹھ گئے۔

مزید پڑھیں : 800 کیا ایک لاکھ لوگوں کوروزگاردوں گا‘چاہے پھانسی چڑھا دو‘ خورشیدشاہ

یاد رہے پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے قومی اسمبلی میں اظہار کرتے ہوئے کہا تھا 800 کیا ایک لاکھ لوگوں کوروزگاردوں گا‘چاہے پھانسی چڑھا دو، نوجوانوں کوروزگاردینا حکومت کی آئینی ذمے داری ہے، اگرحکومت یہ کرتی ہے تو سب کوخوشی ہوگی۔

پیپلزپارٹی کے رہنما کا کہنا تھا کہ کہ ہم نے نہ صرف لوگوں کوروزگار دیا بلکہ اسے تحفظ بھی دیا، ووٹ لینا اصل چیزنہیں اصل چیزڈیلیورکرنا ہے۔

خیال رہے فواد چوہدری نے صبح سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا تھا کہ پی پی پی نے تمام اداروں میں اپنے ساتھیوں کا تقرر کیا، 3 دن میں خورشیدشاہ نے 800 لوگ ریڈیو پاکستان میں رکھے، خورشید شاہ کے اقدام سے 7 کروڑکا اضافی بوجھ پڑا، پی پی پی کی وژن لیس پالیسی کا شکریہ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں