site
stats
پاکستان

سپریم کورٹ نے پورا معاملہ کھول دیا تو ن لیگ کو لینے کے دینے پڑ جائیں گے، فواد چوہدری

اسلام آباد : تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ کہ سپریم کورٹ نے پورا معاملہ کھول دیا تو ن لیگ کو لینے کے دینے پڑ جائیں گے، ن لیگ کی خواہش ہے کہ نیب سے جان چھوٹ جائے اور تاحیات اہلی کا قانون تبدیل ہوجائے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کے باہر میڈ یا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے رہنما فواد چوہدری نے کہا کہ نوازشریف کا مؤقف ہے نااہلی آرٹیکل62 پرنہیں ہونی چاہیے تھی، نااہلی تاحیات نہیں ہونی چاہیے، وکیل کہتے ہیں مقدمہ سپریم کورٹ میں براہ راست نہیں آنا چاہیےتھا، جب یہ اسکینڈل آیا تھا کسی ادارے نے تحقیقات نہیں کیں، نیب،پارلیمنٹ سمیت کسی کو اسکینڈل کی تحقیقات نہیں کرنے دی گئیں، بصورت مجبوری اسکینڈل کوسپریم کورٹ میں لے کر آئے۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ عدالت نے آج جو ریمارکس دیئے اس سے مطمئن ہیں، سپریم کورٹ نے پورا معاملہ کھول دیا تو ن لیگ کو لینے کے دینے پڑ جائیں گے، سپریم کورٹ نےفیصلہ لکھنے میں انتہائی محتاط انداز اپنایا ہے، عدالت کہتی ہے برف کا ڈبہ کھولا تو سب کچھ سامنے آئے گا، ڈبہ کھل گیا تو پھرجو یہ نئے وزیر بنے ہیں، عدالت کے باہر روئیں گے۔

تحریک انصاف کے رہنما نے کہا کہ ن لیگ کی خواہش ہے کہ نیب سے جان چھوٹ جائے اور تاحیات اہلی کا قانون تبدیل ہوجائے، عدالت نے کہا غریب اور امیر آدمی کیلئے الگ الگ قانون ممکن نہیں، احتساب کیلئے کھڑے ہیں، ملزمان کو جیل تک چھوڑ کر آئیں گے، کچھ لوگ عدالت میں پاؤں پڑتے ہیں، باہرگلے پڑتے ہیں، ان لوگوں کوکچھ نہیں بچاناصرف پیسے بچانا ہیں۔


مزید پڑھیں : جوسپریم کورٹ کے فیصلے کے ساتھ نہیں اُس کا کوئی مستقبل نہیں، فواد چوہدری


انکا کہنا تھا کہ نظرثانی درخواست کا مقصد سپریم کورٹ کی نگرانی ہٹاناہے، عوام کے ہزاروں کروڑ روپوں کا سوال ہے، نظرثانی کی اپیل سپریم کورٹ کی توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، اگر شریف فیملی نہ ہوتی کوئی اور ہوتا تو جیل میں ہوتا، نیب پوری طرح سے شریف خاندان سےملاہواہے، مقصد ہے سپریم کورٹ کسی طر ح اس پر سے ہاتھ اٹھالے۔

فوادچوہدری نے کہا کہ رکنی بینچ بننےپرسپریم کورٹ کے باہر مٹھائیاں بانٹی جارہی تھیں، رکنی بینچ پر اس کے بننے کے وقت کیوں اعتراض نہیں کیا گیا، ایف زیڈ ای کپیٹل کمپنی دبئی میں قائم ہے، نوازشریف سربراہ ہیں، شریف خاندان کی دیگر تمام کمپنیوں کو پیسے ایف زیڈای سے جارہے تھے۔

رہنما پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ کیاسیاست دان اب بیگم کی بیماری کے پیچھے چھپے گئے، کبھی پرویزمشرف کے پاکستان نہ آنے پرالزام لگا رہے تھے، عمران خان کی سوائے اےٹی سی کے تمام عدالتوں میں نمائندگی ہے، ہمارامؤقف ہے ایک سیاسی معاملے کو دہشت گردی کا مسئلہ بنا دیا گیا ہے، معاملے کو عام عدالت میں لایا جائے تو پیش ہونے کے لیے تیارہیں، دہشت گردی کےمقدمے میں عمران خان کو گرفتارکرنا ہے تو عمران خان تیار ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top