The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف واپس نہیں آئیں گے انہوں نے پہلی بار تو فراڈ نہیں کیا، فواد چوہدری

اسلام آباد : وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ پہلے کہہ دیا تھا کہ نواز شریف واپس نہیں آئیں گے، شریف فیملی نے پہلی مرتبہ تو فراڈ نہیں کیا، فضل الرحمان حلوہ اور ن لیگ کھچڑی بناکر بیٹھی ہوئی ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام سوال یہ ہے میں میزبان ماریہ میمن کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف جب پاکستان میں تھے تو کہہ رہے تھے کہ مجھے باہر جانے دیں، ان سے متعلق میں نے جب ہی کہہ دیا تھا کہ یہ واپس نہیں آئیں گے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ سیاسی اخلاقیات ہے نہیں کہتے ہیں کہ نوازشریف واپس نہیں آئیں گے، پاکستان میں شور کیاہوا تھا نوازشریف کی صحت تشویشناک ہے، باہر گئے تو نوازشریف چہل قدمی کررہے ہیں اور تصاویر بھیج رہے ہیں،یہ کیسا مذاق ہے کہ پاکستان کے قانونی نظام پر منہ چڑھایا جارہاہے، اس کا مذاق اڑایا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ کیسا ٹیسٹ ہے جو جہاز میں قدم رکھتے ہی تبدیل ہوگیا، پاکستان میں ٹیسٹ رپورٹس تشویشناک آرہی تھیں وہاں ٹھیک ہیں، پنجاب کابینہ میں آواز اٹھنی چاہیے، ٹیسٹ رپورٹ تبدیل کیسے ہوگئیں، تحقیقات ہونگی تو پتہ چلے گا نوازشریف کی صحت کا اصل معاملہ کیا ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ پنجاب حکومت کے ساتھ بنیادی طور پر فراڈ ہوا ہے، شریف فیملی نے پہلی مرتبہ تو فراڈ نہیں کیا یہ ہمیشہ کرتے رہتے ہیں، مسلم لیگ ن اپوزیشن میں بڑا کردارادا نہیں کرسکتی کیونکہ ان میں کلیئر ہی نہیں لیڈر شپ کس کے پاس ہے،
لیڈر شپ کا پتہ چلے گا تو ن لیگ کی اپنی وقعت ہوگی اور فیصلہ ہوگا۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ فضل الرحمان حلوہ بنا کر بیٹھے ہیں اور ن لیگ کھچڑی بنا کر بیٹھی ہے، نواز شریف وطن واپس نہیں آئیں گے تو مسلم لیگ ن کا ہی نقصان ہوگا، ن لیگی کارکن بھی کہہ رہے ہیں کہ وہ حکومت جاتے ہی باہر چلے جاتے ہیں، جب لیڈرشپ کا یہ حال ہے تو کارکن مایوس ہی ہوگا اور صدا بلند کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ قانونی طور پر نوازشریف مجرم ہیں اور عدالتی ضمانت پر باہر گئے ہیں، عدالت سے ایک درخواست جائے گی اور برطانوی حکومت اقدام اٹھائے گی۔

ایک سوال کے جواب میں فواد چوہدری نے کہا کہ آئندہ کابینہ اجلاس میں ذکر کروں گا کراچی کیلئے فنڈز کیسےجائیں گے، کسانوں کو جدید ٹیکنالوجی سے روشناس کرارہے ہیں، کسانوں کیلئے مختلف پروجیکٹ پرکام کررہے ہیں جلد منصوبے آئیں گے،.

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان معمول کی فصلیں فروخت کرکے اپنے خسارے پورے نہیں کرسکتا، ہمیں ایسی فصلوں کی طرف جانا ہوگا جس سے انکم بڑھے، ہمیں ایگری کلچر میں جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کرنا ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں