The news is by your side.

Advertisement

‘سازش کیوں نہیں روکی گئی اب بات کرنے کا فائدہ نہیں’

تحریک انصاف کے رہنما و سابق وزیر اطلاعات فوادچوہدری نے کہا ہے کہ سازش کیوں نہیں روکی گئی اس پر اب بات کرنےکافائدہ نہیں ہے کوئی بھی حکومت مدت پوری نہیں کرتی اس پر سب کو سوچنا ہو گا۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام سوال یہ ہے میں گفتگو کرتے ہوئے فوادچوہدری نے کہا کہ اتحادی جماعتیں جب ہمیں چھوڑرہی تھیں تواس وقت معیشت پربریفنگ رکھی عمران خان نےشوکت ترین کوہدایت کی کہ معیشت سے متعلق آگاہ کریں شوکت ترین معیشت سےمتعلق اتحادی جماعتوں کومکمل بریفنگ دی۔

انہوں نے کہا کہ سندھ میں حالات بہت خراب ہیں اس پر کوئی مخالفت نہیں کرے گا عمران خان کاشروع سے مؤقف رہا ہے سندھ میں بیڈگورننس ہے عمران خان کرپشن کیخلاف ہیں،سندھ میں کرپشن عروج پرہے۔

 

 

فوادچوہدری نے کہا کہ بلاول بھٹوسےمیری کوئی بات چیت نہیں ہوئی مارشل لاکی باتیں تومیڈیامیں بطورتجزیہ کر چکا ہوں میں نے کہاتھا سسٹم کو ڈی گریڈ کیا جا رہا ہے مارشل لا کو دعوت دی جارہی ہے پاکستان میں 5،6 پاور سینٹر ہیں اور گیندان کےدرمیان گھومتی ہےسارےپاورسینٹرزمیں ایک چیزمشترکہ ہےدوسرےکوطاقتورنہیں دیکھ سکتے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارا ایسا نظام ہونا چاہیےکہ سہارا دے کر دوسرےکو اوپر کرنا چاہیے الیکشن کی طرف توہرصورت جانا ہے فیصلہ یہ کرنا ہےکہ زیادہ نقصان کر کے الیکشن میں جاناہے یا کم، لانگ مارچ کااعلان تو 20 تاریخ کو ہو گا راناثنااللہ کہتےہیں لوگوں کوپکڑکرجیلوں میں ڈالیں گے لوگوں کوپکڑکرجیلوں میں ڈالیں گےتواس سے انتشار بڑھے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں