The news is by your side.

’عمران خان کو عدم اعتماد سے باہر کرنے کا فیصلہ درست کرنے کا وقت آگیا‘

پی ٹی آئی کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ عمران خان کو ہٹانے کا فیصلہ غلط اور غیر مقبول تھا جس کو درست کرنے کا وقت آگیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق فواد چوہدری نے گوجرانوالہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو ہٹانے کا فیصلہ غلط اور غیر مقبول تھا ضمنی انتخابات میں 75 فیصد سے زائد پی ٹی آئی کامیاب ہوئی ہے، عمران خان کو عدم اعتماد کے ذریعے باہر کرنے کے فیصلے کو درست کرنے کا وقت آگیا ہے، اب پاکستان میں عوام کی اکثریت جو فیصلہ کریگی وہی حتمی ہوگا، ہمارا مطالبہ ہے شفاف الیکشن کرائیں اور عوام کو فیصلہ کرنے دیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کل نواز شریف کا ٹوئٹ آیا لانگ مارچ میں دو سے تین ہزار لوگ ہیں اور پھر اسلام آباد کی سیکیورٹی کیلیے 41 کروڑ کی گرانٹ منظور کرلی گئی، جب 2 سے 3 ہزار لوگ ہیں تو فکر کیا ہے ہمیں آنے دیں، آپ کو اتنا خوف کیوں ہے کہ لانگ مارچ رکوانے کے لیے سپریم کورٹ پہنچ گئے، آپ نےفیصل مسجد کے اندر سیکیورٹی فورسز کو ٹھہرایا ہے، اتنی بڑی سیکیورٹی کے انتظامات کیوں کیے ہیں؟ کیا دشمن ملک سے نبرد آزما ہیں؟

فواد چوہدری نے کہا کہ الیکشن کمشنر نے فیصلے سے ایک ہفتے قبل کہا تھا کہ عمران خان نااہل ہوگا، الیکشن کمیشن کا فیصلہ عوام نے اٹھا کر باہر پھینک دیا، ن کا پروپیگنڈا ہے کل ہمارے خلاف چار پریس کانفرنسز کی ہیں، کہا جا رہا ہے کہ یہ لوگ فوج کو برداشت نہیں کر رہے، پاک فوج سے ہمارا احترام کا رشتہ ہے ہمیں شہیدوں کی قدر ہے، مگر کوئی بھی ادارہ ہو، حتمی فیصلہ عوام کا ہونا چاہیے۔

پی ٹی آئی رہنما نے مزید کہا کہ شہباز شریف پر ان کے بچے اور بھائی نواز شریف یقین کرکے پاکستان آنے کو تیار نہیں، جب ان کی فیملی بھروسہ نہیں کر رہی تو بیرونی سرمایہ کار کیا کریں گے، عالمی منڈی میں تیل کی قیمت کم ہو رہی ہے لیکن پاکستان میں عوام کو فائدہ نہیں دیا جا رہا۔

فواد چوہدری نے مزید کہا کہ لانگ مارچ کے ساتھ ہزاروں لوگ واک کر رہے ہیں، ہم لانگ مارچ کو تیز نہیں کر سکتے، ایسا کیا تو کوئی حادثہ ہوسکتا ہے، لانگ مارچ کو حادثے سے بچا کر منزل پر پہنچانا ضروری ہے، لگ نہیں رہا کہ جمعے تک اسلام آباد پہنچیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں