The news is by your side.

Advertisement

مولانا فضل الرحمان کی آصف علی زرداری سے ملاقات

لاہور: مولانا فضل الرحمان اور آصف علی زرداری میں اسمبلیوں کی مدت پوری کرنے اور پی ٹی آئی ارکان کے ممکنہ استعفوں پر مشترکہ حکمت عملی پر اتفاق کیا گیا، رہنماؤں کا کہنا ہے کہ سیاست میں اسٹیبلشمنٹ کا کوئی کردارنہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق جمیعت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے لاہور میں پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری سے ملاقات کی۔

اس موقع پر دونوں رہنماؤں نے ملکی سیاسی صورتحال پرتبادلہ خیال کیا، مولانا فضل الرحمان اور آصف علی زرداری نے اس بات پر اتفاق کیا کہ جمہوریت کی بقا کیلئے پارلیمنٹ کی بالادستی قبول کی جائے اسمبلیوں کو اپنی مدت پوری کرنا چاہیئے۔

رہنماؤں کا اس بات پر بھی اتفاق تھا کہ اسٹیبلشمنٹ کا سیاست میں کوئی کردار نہیں ہے، سینیٹ انتخابات وقت پر ہونے چاہئیں، قومی اسمبلی سے پی ٹی آئی ارکان کے ممکنہ استعفوں پر مشترکہ حکمت عملی پر اتفاق کیا گیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ کے پی کے اسمبلی تحلیل ہونے کی صورت میں بھی مشترکہ حکمت عملی اختیار کی جائے گی، اس حوالے سے تمام معاملات پارلیمنٹ اور سول بالادستی کی شکل میں چلائےجانےچاہئیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ خطرہ ہوا تو بلوچستان حکومت جیسی تبدیلی کے پی کےمیں بھی لائی جاسکتی ہے۔

علاوہ ازیں ملاقات کے بعد آصف زرداری کی جانب سے مولانافضل الرحمان کو ظہرانہ بھی دیا گیا۔ بعد ازاں مولانا فضل الرحمان وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات کے لیے پہنچے اور شہباز شریف سے بھی موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر ضرور شیئر کریں۔ 

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں