The news is by your side.

Advertisement

ایف بی آر کا عدم تعاون شوگر کرپشن کی تحقیقات میں بڑی رکاوٹ بن گیا

اسلام آباد : شوگرانکوائری میں ایف آئی اے کے متعدد خطوط کے باوجود ایف بی آر تفصیلات دینے سےگریزاں ہیں،جس کے باعث شوگر کرپشن تحقیقات مقررہ مدت میں مکمل نہ ہونے کا خدشہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایف بی آر کا عدم تعاون شوگر کرپشن کی تحقیقات میں بڑی رکاوٹ بن گیا ، ایف آئی اے کے متعدد خطوط کے باوجود ایف بی آرتفصیلات دینے سےگریزاں ہیں۔

ایف آئی اے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم میں ایف بی آر نمائندہ شامل کرنے کی درخواست کی تھی اور ایف بی آر سے شوگرملزکی جولائی 2014 سے مارچ 2020کی تفصیلات مانگی گئیں۔

ایف بی آر ملز کی زیرورییٹڈسیلزویریفیکیشن کی تفصیلات اور ملز کی قابل ٹیکس آمدن کی تفصیلات دینے میں ناکام رہی، ایف بی آر عدم تعاون سے شوگر کرپشن تحقیقات مقررہ مدت میں مکمل نہ ہونے کا خدشہ ہے۔

یاد رہے شوگر انکوائری کمیشن رپورٹ پرایکشن کیلئے فیڈرل انوسٹیگیشن ایجنسی (ایف آئی اے) نے گیارہ رکنی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی تھی ، گیارہ رکنی تحقیقاتی ٹیم جعلی طور پر چینی کی افغانستان برآمد کرنے سمیت منی لانڈرنگ کی بھی تحقیقات کرے گی۔

خیال رہے وزیر اعظم نے شوگر کمیشن رپورٹ کی بنیاد پر ایف بی آر، نیب، ایس ای سی پی اور ایف آئی اے کو تحقیقات کا حکم بھی دیا جبکہ وزیر اعظم کی ہدایت پر مشیر برائے احتساب شہزاد اکبر نے گورنراسٹیٹ بینک، مسابقتی کمیشن اور 3 صوبوں کو اس سلسلے میں خطوط لکھے ، جن کے ساتھ شوگر کمیشن رپورٹ بھی ارسال کی گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں