The news is by your side.

Advertisement

ایف بی آر نے پراپرٹی پر سیلز ٹیکس کم کردیا

اسلام آباد : فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے پراپرٹی پر سیلز ٹیکس کم کردیے ، تعمیر شدہ گھریافلیٹ کی 4 سال بعد اور پلاٹ کی 8 سال بعد فروخت پرکوئی ٹیکس نہیں ہوگا جبکہ چار سال سے پہلے فروخت کرنے پر کیپیٹل گین ٹیکس لگے گا۔

تفصیلات کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے پراپرٹی ٹیکس کی چھوٹ کی مدت اور شرح میں کمی کا اصولی طور پر فیصلہ کرلیا، جس کا اعلان حکومت کی جانب سےکیا جائے گا۔

ایف بی آر نے پراپرٹی پر سیلز ٹیکس کم کردیے، جس کے بعد تعمیر شدہ گھریافلیٹ کی 4 سال بعد فروخت اور پلاٹ کی 8 سال بعد فروخت پرکوئی ٹیکس نہیں ہوگا۔

ذرائع ایف بی آر کے مطابق چار سال سے پہلے فروخت کرنے پر 50 لاکھ کی پراپرٹی پر5 فیصد کیپیٹل گین ٹیکس ، ایک کروڑ کی پراپرٹی پر 10 فیصد کیپیٹل ٹیکس لاگو ہوگا۔

ڈیڑھ کروڑ روپے کی پراپرٹی پر 15 فیصد اور 2کروڑ روپے کی پراپرٹی پر 20 فیصد کیپیٹل گین ٹیکس لگے گا۔

اس وقت پراپرٹی ملکیت کے 3 سال کے اندر فروخت کرنے پر ٹیکس عائد ہے جب کہ 3 سال بعد پراپرٹی فروخت کرنے پر ٹیکس کی شرح صفر ہے، 30 جون کے بعد پراپرٹی ملکیت کے 10 سال کے اندر فروخت کرنے پر15 فیصد ٹیکس کی تجویز ہے۔

نئے فنانس بل میں تجویز کردہ 10 سالہ مدت کے بعد پراپرٹی فروخت کرنے پرٹیکس کی شرح صفر ہوگی۔

یاد رہے اس سے قبل ایف بی آرنےبائیس بڑےشہروں کیلئےجائیدادکی قیمتیں بڑھانےکافیصلہ کیا تھا ، جائیداد کی ایف بی آر قیمتیں یکم جولائی سے مارکیٹ ویلیو کی 85 فی صد ہو جائیں گی، ایف بی آر نے جائیداد کی قیمتوں پر یہ نظر ثانی 5 ماہ کے لیے کی ہے۔

کراچی کے لیے رہایشی جائیداد کی قیمتوں میں 54 فی صد تک اضافہ، کمرشل جائیداد کی قیمتوں میں 67 فی صد تک اضافہ جب کہ جائیداد کی قیمتوں کی 11 کیٹگریز برقرار رکھنے کی تجویز دی گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں