The news is by your side.

Advertisement

کروناوائرس کا خوف : برطانیہ میں مکمل لاک ڈاؤن کا اعلان

اگر عوام نے لاک ڈاؤن کے قواعد کی پاسداری نہ کی تو پولیس زبردستی عمل کرائے گی، بورس جانسن

لندن : کرونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کےلیے برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے تین ہفتوں کےلیے مکمل لاک ڈاؤن کا اعلان کردیا، لاک ڈاؤن کے دوران دو سے زائد افراد کے جمع ہونے پر پابندی ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق کرونا وائرس کی وبا نے چین کے بعد سب سے زیادہ نقصان یورپی ممالک کو پہنچا رہا ہے جس میں سب سے زیادہ متاثر اٹلی اور اسپین ہیں جہاں اموات کی تعداد 5 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ برطانیہ میں بھی حالات انتہائی تشویش ناک ہیں جس پر قابو پانے کےلیے برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے مکمل لاک ڈاؤن کا اعلان کردیا ہے۔

وزیر اعظم بورس جانسن نے پیر کی شام ٹی وی پر عوام سے خطاب کرتے ہوئے عوام کو کرونا وائرس سے بچاؤ کی تدابیر بتائیں اور گھروں میں رہنے کی اپیل کی، بورس جانسن نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے دوران ملک بھر میں تمام غیر ضروری دکانیں بند رہیں گی۔

برطانوی وزیر اعظم نے عوام کو ہدایت کی کہ آپ کو گھر پر رہنا ہے اور کرونا کی وبا کو گھروں میں داخل ہونے سے روکنا ہے اور ایک دوسرے سے سماجی دوری بنائے رکھنے ہے اور تفریحی مقامات و پارکوں میں جانے سے گریز کرنا ہے۔

بورس جانسن نے اعلان کیا کہ شہریوں کو طبی ضروریات، اشیائے خردونوش، دفتر آنے جانے کےلیے گھروں سے نکلنے کی اجازت ہے، لیکن اس دوران کپڑوں، الیکڑانکس مارکیٹ، لائبریریز، شادی ہالز اور عبادت گاہیں بند رہیں گی جبکہ گھروں اور ہوٹلوں میں بھی شادی بیاہ اور کسی قسم کی تقریب منعقد کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ تدفین کی رسومات پر کوئی پابندی نہیں ہوگی اور پارکس بھی کھلے رہیں گے تاکہ لوگ ورزش کرسکیں لیکن اگر عوام نے قوانین اور احکامات پر عمل درآمد نہیں کیا تو پولیس زبردستی عمل کروائے گی۔

برطانوی وزیر اعظم نے اعلان کیا کہ جو افراد انسداد کرونا وائرس احکامات کی پابندی نہیں کریں گے انہیں جرمانے اور سزا کا سامنا کرنا پڑے گا۔

خیال رہے کہ کرونا وائرس کی وبا اب تک برطانیہ میں 335 افراد کو لقمہ اجل بنا چکی ہے جبکہ متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 6650 ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں