The news is by your side.

Advertisement

رانا ثنااللہ کی ضمانت پر وفاقی وزرا ء کابینہ اجلاس میں برس پڑے

اسلام آباد: مسلم لیگ(ن) کے رہنما و رکن قومی اسمبلی رانا ثنااللہ کی منشیات کیس میں ضمانت پر وفاقی وزراء کابینہ اجلاس میں برس پڑے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں راناثنااللہ منشیات کیس زیربحث آیا، ڈی جی اے این ایف نےکابینہ کو راناثنااللہ کیس پربریف کیا جس پر وفاقی وزراء نے ڈی جی اے این ایف سے سخت سوالات کیے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کابینہ کے بعض اراکین نے کیس کو مس ہینڈل کرنے پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ راناثنااللہ کیس میں اےاین ایف کی نااہلی واضح ہے، تفتیش کے بنیادی پہلوؤں کو ملحوظ خاطر ہی نہیں رکھا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: منشیات برآمدگی کیس: رانا ثنا اللہ ضمانت پر رہا

وفاقی وزراء نے کہا کہ معاملے پر مبہم ایف آئی آردرج کی گئی اور یہ ایف آئی آر کیس کےساتھ سب سے بڑا مذاق تھا، پاکستان میں مقدمات بنانا آسان کام ہے لیکن ثابت کرنا مشکل ہے۔

ایک وفاقی وزیر نے کہا کہ آپ صاف کہہ دیں کہ کہیں نا کہیں نااہلی ہوئی ہے کیونکہ اتنا مضبوط کیس تھا تو ضمانت کیسے ہو گئی۔

واضح رہے کہ لاہور ہائی کورٹ نے منشیات برآمدگی کیس میں رانا ثنااللہ کی درخواست ضمانت منظور کرتے ہوئے رہا کرنے کا حکم دیا تھا۔

تحریری فیصلے کے مطابق رانا ثنا اللہ پر 15 کلو ہیروئن رکھنے کا مقدمہ بنایا گیا لیکن ان کا جسمانی ریمانڈ ہی نہیں لیا گیا۔ عدالت نے قرار دیا کہ اس مرحلے پر ملزم ضمانت کا حقدار ہے لہٰذا 10، 10 لاکھ کے دو ضمانتی مچلکوں کے عوض ضمانت منظور کی جاتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں