فیس کی عدم ادائیگی : 3 بچے 3 سال تک ہاسٹل میں قید کیے جانے کا انکشاف -
The news is by your side.

Advertisement

فیس کی عدم ادائیگی : 3 بچے 3 سال تک ہاسٹل میں قید کیے جانے کا انکشاف

کراچی : اے آروائی نیوز کے پروگرام سرعام کی ٹیم نے ایک ماں کو تین سال بعد اس کے تین بچوں سے ملوادیا، مذکورہ بچے ایک ہاسٹل میں قیام پذیر تھے، جس کی فیس ادا نہ کرنے سبب ہاسٹل انتظامیہ نے ماں کو بچوں سے ملنے پر پابندی عائد کر رکھی تھی۔

متاثرہ ماں رضوانہ خاتون کا کہنا تھا کہ تین سال قبل شوہر سے طلاق کے بعد عدالت نے اس کے تین بچوں ایک بیٹی اور دو بیٹوں کوشوہرسے لے کر میرے حوالے کردیا تھا، بعد ازاں سابق شوہر کی جانب سے بچوں کو اغوا کرنے کی دھمکیوں پر میں نے تینوں بچوں کو وقتی طور پر لاہور کے ایک بورڈنگ اسکول کے پی ایس میں داخل کروا دیا تھا۔

اسکول میں بچوں کی رہائش کا بھی انتظام تھا لیکن کچھ ماہ بعد لاکھ کوشش کے باوجود اسکول کی فیس جمع نہ کراسکی، جس پر اسکول انتظامیہ نے یہ کہہ کربچوں کو ملانے سے منع کردیا کہ پانچ لاکھ 34ہزار 500 روپے کے واجبات کی ادائیگی تک بچوں سے نہیں ملا سکتے، اور نہ ہی بچے اس کے حوالے کیے جائیں گے۔

اسی طرح تین سال کا عرصہ گزرگیا، لیکن رضوانہ خاتون کو بچوں سے ملنا تو درکنار ان کی شکل تک نہیں دکھائی گئی، ہر طرح کی کوششیں کرنے کے بعد اورسب جگہ سے مایوس ہوکراس دکھیاری ماں نے سرعام کی ٹیم سے رابطہ کیا۔

تمام تحقیقات کے بعد سر عام کی ٹیم نے لاہور میں چائلڈ پروٹیکشن بیورو کی سربراہ اور صوبائی وزیر صبا صادق سے رابطہ کیا جنہوں نے مکمل تعاون کرتے ہوئے اپنی ٹیم کو سرعام کی ٹیم کے ساتھ روانہ کردیا اور کارروائی کے بعد ان بچوں کو بورڈنگ اسکول کی قید سے آزاد کرادیا گیا۔

بعد ازاں قانونی کارروائی مکمل کر کے ان بچوں کو بذریعہ پی آئی اے کی پرواز لاہور سے کراچی منتقل کیا گیا، سر عام کی ٹیم نے رمضان المبارک کے پروگرام شان رمضان میں بطور مہمان رضوانہ خاتون کو بھی بھکر سے کراچی بلوالیا اور اس بات کی اطلاع نہیں دی کہ اسے کیا خوشی ملنے والی ہے۔

جب شان رمضان میں رضوانہ خاتون اپنی آپ بیتی رو رو کر سنا رہی تھی تو اسی دوران اس کے بچوں کو اس کے سامنے لایا گیا، یہ منظر اتنا رقت آمیز تھا کہ دیکھنے والی ہر آنکھ اشکبار ہوگئی (جیسا کہ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے)

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں