The news is by your side.

Advertisement

ایف آئی اے آفس پر دھاوا، ن لیگی رہنما اور کارکنان بڑی مشکل میں‌ پھنس گئے

لاہور: فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی ( ایف آئی اے) نے مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کے خلاف کارروائی کے لیے پولیس کو درخواست دے دی۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کو بیرونِ ملک روانگی کے عین وقت پرواز سے آف لوڈ کرنے پر مسلم لیگ ن کے رہنماؤں نے ایف آئی اے کے لاہور آفس پر دھاوا بولا۔

فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی نے لیگی رہنماؤں کے خلاف پولیس کو تحریری دراخوست دائر کی، جس میں مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب، عطا تارڑ، میاں مرغوب، غزالی بٹ سمیت 12 نامعلوم افراد کے نام درج ہیں۔

اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف آئی اے کی جانب سے سی سی پی او لاہور کو دی جانے والی درخواست کے متن میں لکھا گیا ہے کہ ’لیگی رہنماؤں نے ایف آئی اے لاہور کے آفس پردھاوا بولا، انہوں نےکوونا ایس اوپی زکی بھی خلاف ورزی کی‘۔

درخواست میں پولیس سے استدعا کی گئی ہے کہ وہ مذکورہ لیگی رہنماؤں سمیت کارکنوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائے۔

مزید پڑھیں: شہباز شریف قطر نہ جا سکے، ایئر لائن نے آف لوڈ کر دیا

یاد رہے کہ لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے جاری ہونے والے فیصلے کی روشنی میں مسلم لیگ ن کے رہنما شہباز شریف قطر روانہ ہورہے تھے کہ انہیں عین پرواز کے وقت امیگریشن حکام نے روک لیا تھا۔

شہباز شریف کو امیگریشن حکام کی اجازت نہ ملنے پر ایئر لائن نے آف لوڈ کر دیا، انھیں آج نجی ایئر لائن کی پرواز سے قطر روانہ ہونا تھا، ذرائع کا کہنا ہے کہ شہباز شریف کو پی این آئی لسٹ میں نام ہونے کی وجہ سے روکا گیا۔ شہباز شریف کو ایئر لائن حکام نے بورڈنگ پاس جاری کر دیا تھا، تاہم ایف آئی اے حکام نے شہباز شریف کو امیگریشن کاؤنٹر پر روکا، جس پر انھیں آف لوڈ کیا گیا تاہم شہباز شریف نے طیارے کی اڑان بھرنے تک ایئر پورٹ پر رکنے کا فیصلہ کیا۔

امیگریشن حکام کا کہنا تھا کہ سسٹم اپ ڈیٹ ہونے تک شہباز شریف ملک سے باہر نہیں جا سکتے۔ دوسری طرف عدالتی فیصلے میں شہباز شریف کو صرف ایک بار بیرونِ ملک جانے کی اجازت دی گئی تھی، عدالتی فیصلے میں شہباز شریف کی غیر ملکی فلائٹ کا نمبر بھی درج تھا، اس ضمن میں ایف آئی اے سمیت متعلقہ اداروں کو ہدایات بھی جاری کی گئی تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں