The news is by your side.

Advertisement

شیئر ہولڈرز کے ساتھ فراڈ، ایف آئی اے نے جہانگیر ترین اور ان کے بیٹے سے 5 اہم سوالات پوچھ لیے

اسلام آباد: چینی کا کاروبار بیچنے کے سلسلے میں شیئر ہولڈرز کے ساتھ فراڈ کے کیس میں وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے جہانگیر ترین اور ان کے بیٹے علی ترین کو 9 اپریل کو پانچ پانچ سوالات کے جوابات کے ساتھ طلب کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایف آئی اے نے شیئر ہولڈرز کے ساتھ فراڈ کے کیس میں جہانگیر ترین اور ان کے بیٹے سے 5 اہم سوالات پوچھ لیے ہیں، اور انھیں جوابات کے ساتھ ایک بار پھر 9 اپریل کو طلب کر لیا، جہانگیر ترین کو 2، جب کہ علی ترین کو ایک کیس کی تفتیش کے لیے طلب کیا گیا ہے۔

ایف آئی اے کی جانب سے جاری نوٹس میں کہا گیا ہے کہ علی ترین نے والد کے ساتھ مل کر شیئر ہولڈرز کے ساتھ فراڈ کیا، انھوں نے گنے کے کاروبار کو خود سے طے کردہ قیمت 4.85 ارب روپے میں بیچا، اس ٹرانزکشن سے علی ترین کے خاندان کو شیئر ہولڈ کی قیمت پر فائدہ ہوا۔

علی ترین سے 5 سوال

ایف آئی اے نے نوٹس میں 5 سوالات پوچھے ہیں، چینی کے کاروبار جے کے ایف ایس ایل (JK Farming Systems Limited) کو کیوں بیچا؟ کیا گنے کا کاروبار بیچنے کے لیے کہیں بھی کوئی اشتہار دیا تھا؟ کتنے ممکنہ خریداروں نے کمپنی سے رابطہ کیا اور کیا قیمت لگائی؟ گنے کا کاروبار بیچنے کی قیمت 4.35 ارب روپے کیسے لگائی گئی؟ دستاویز دیں، جے کے ایف ایس ایل نے 4.35 ارب روپے کہاں استعمال کیے؟ منی ٹریل دیں۔

نوٹس میں کہا گیا ہے کہ کمپنی ریکارڈ کے مطابق جے کے ایف ایس ایل کو 2013 میں 326 ملین کا نقصان ہوا تھا، اس نقصان کے باوجود گنے کا کاروبار کئی گناہ زیادہ قیمت پر جے ڈی ڈبلیو کو بیچا گیا تھا۔

ایف آئی اے جہانگیر ترین کو بھیجے نوٹس میں کہا ہے کہ آپ کی جے ڈی ڈبلیو نے JKFSL کے چینی کے کاروبار کو خریدا، لیکن شیئر ہولڈرز سے فراڈ کر کے جے کے ایف ایس ایل کے شیئرز مہنگے داموں لیےگئے، اور اس طرح آپ نے فیملی کو فائدہ پہنچایا۔

جہانگیر ترین سے 5 سوال

ایف آئی اے نے جہانگیر ترین کو بھی 5 سوالات کے جوابات ساتھ لانے کی ہدایت کی۔

ایف آئی اے نے پوچھا، آپ نے JDW کے سی ای او کے طور پر جے کے ایف ایس ایل کو خریدنے کے لیے قیمت کا تعین کیسے کیا؟ اپنے بورڈ کو قیمت کے تعین کے لیے کون سی ویلیو ایشن رپورٹ دی؟ کیا آپ نے جے ڈی ڈبلیو بورڈ کو بتایا تھا کہ جے کے ایف ایس ایل کا مارکیٹ میں خریدار نہیں؟ کیا آپ نے بورڈ کو بتایا کہ جے کے ایف ایس ایل خسارے میں ہے؟ جے کے ایف ایس ایل کو خریدنے کے بارے میں آپ نے شیئر ہولڈرز کو کیا تفصیلات دیں؟

فاروقی پلپ ملز سے متعلق 5 سوال

ایف آئی اے نے دوسرے کیس میں جہانگیر ترین کو بھیجے گئے نوٹس میں کہا ہے کہ جے ڈی ڈبلیو کے فنڈز سے 3.14 ارب روپے فاروقی پلپ ملز میں سرمایہ کاری کی گئی، لیکن شیئر ہولڈرز کو یہ نہیں بتایا گیا کہ فاروقی پلپ مسلسل خسارے میں ہے، جہانگیر ترین 9 اپریل کو پیش ہو کر 5 سوالوں کے جوابات دیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق ایف آئی اے حکام نے جے ڈی ڈبلیو کے سیکریٹری کو نوٹس حوالے کر دیے، نوٹس میں کہا گیا ہے کہ جہانگیر ترین فاروقی فیملی سے تعلق، شاہد سلیم رانا کی بطور سی ای او تعیناتی کی تفصیل دیں، 560 ملین روپے جاری کرنے سے پہلے کیا فاروقی پلپ ملز کی تفصیلات لی تھیں؟

ایف آئی اے نے پوچھا ہے کہ فاروقی پلپ خریدنے سے پہلے شیئر ہولڈرز سے کون کون سی معلومات چھپائی گئیں؟ مردہ کمپنی میں 3.14 ارب روپے لگا کر کیا فائدہ حاصل کیا گیا؟ کیا 3.14 ارب روپے سے آپ یا آپ کی فیملی نے بھی فائدہ اٹھایا؟

Comments

یہ بھی پڑھیں