The news is by your side.

Advertisement

کالعدم تنظیم کے واٹس ایپ گروپس میں‌ بھارت سمیت دیگر ممالک کے نمبرز کی موجودگی کا انکشاف

لاہور: فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کی تحقیقات میں انکشاف سامنے آیا ہے کہ کالعدم تنظیم کے مختلف واٹس ایپ گروپس میں بھارتی نمبرز بھی موجود ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق سائبر کرائم رپورٹنگ سینٹراسلام آباد نے ایف آئی اے سائبرکرائم ونگ لاہور کو مراسلہ ارسال کیا، جس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ  کالعدم تنظیم کےمختلف واٹس ایپ گروپس میں 28 غیر ملکی نمبرز موجود ہیں۔

ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ کے مطابق  موبائل نمبرز کا تعلق بھارت اور دیگر ممالک سے ہیں، جو پاکستان میں رجسٹرڈ بھی نہیں ہیں۔

ایف آئی اے کے مطابق ان نمبرز کے ذریعے واٹس ایپ کے گروپ ممبران اور کارکنان کو تشدد پر اکسایا گیا، جس کی وجہ سے صورت حال خراب ہوئی۔

ایف آئی اے نے واضح کیا کہ بیرونی ہاتھ امن و امان کی صورت حال خراب کرنے میں ملوث ہیں۔

مزید پڑھیں: کالعدم تنظیم کا مارچ: وزیرداخلہ کا اہم اعلان

یاد رہے کہ ایک روز قبل وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا تھا کہ کالعدم تحریک لبیک پاکستان اسلامی یا سیاسی جماعت نہیں بلکہ عسکری گروہ ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا تھا کہ اس گروہ کو بھارت سے فنڈنگ اور ہدایات دی جارہی ہیں۔

یاد رہے کہ اب سے کچھ دیر قبل وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کالعدم تنظیم کے کارکنان سے واپس جانے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ  ریاست کی رٹ کو ہر صورت قائم کیا جائے گا، جب تمام مطالبات تسلیم کرلیے تھے تو احتجاج کا کوئی جواز باقی نہیں رہا۔

انہوں نے دو ٹوک اعلان کیا کہ مارچ کو ہر صورت اسلام آباد میں داخل ہونے سے روکا جائے گا، مظاہرین واپس مرکز چلےجائیں تو ان سےبات چیت کیلئے تیار ہیں، جی ٹی روڈ بند کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی، جی ٹی روڈ اہم شاہراہ ہےاسےبندنہیں کیاجاسکتا۔

شیخ رشید نے بتایا کہ جمعہ اور ہفتے کو دوبارہ سعد رضوی سے بات ہو گی امید ہے کوئی حل نکل آئے گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے خلاف عالمی پابندیاں لگانے کی سازش ہو رہی ہے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ پولیس کو وہ اختیارات نہیں دیئے جو وہ ہم سے مانگ رہے ہیں،بات آگے بڑھی تو نقصان  زیادہ ہوگا، ٹی ایل پی سیاسی کردار ادا کرے، الیکشن کمیشن نے اس پرپابندی نہیں لگائی، حکومت جھکے گی نہ یرغمال بنے گی،ریاست کی رٹ  قائم کی جائے گی اور مظاہرین کو ہر صورت روکا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں