The news is by your side.

Advertisement

آصف زرداری اور فریال تالپور نے ایف آئی اے سے الیکشن کے بعد تک کی مہلت مانگ لی

کراچی : سابق صدر آصف علی زرداری اور فریال تالپور نے ایف آئی ا ے سے پیش ہونے کیلئے الیکشن کے ایک ہفتے بعد کا وقت مانگ لیا، دونوں کو ایف آئی اے حکام نے آج طلب کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق غیرقانونی ٹرانزیکشن کیس میں ایف آئی اےحکام کی جانب سے آصف زرداری اور فریال تالپور طلبی کے باوجود پیش نہ ہوئے ، دونوں کی جانب سے فاروق ایچ نائک ایسوسی ایٹ کے وکلاء نے ایف آئی اے حکام کے سامنے پیش ہوکر درخواست دی۔

درخواست میں آصف زرداری اورفریال تالپورکے بیانات ایف آئی اے کراچی میں جمع کرائے گئے، آصف زرداری کی جانب سے جواب میں کہا گیا کہ 2014 کی ٹرانزیکشن ہے کا اس وقت ریکارڈ موجود نہیں ، آصف زرادری پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے صدر ہیں اور این اے 213 سے الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔

جواب میں کہا گیا کہ آصف علی زرداری انتخابی سرگرمیوں کی وجہ سے مصروف ہیں ، 25جولائی کے بعد تمام سوالوں کے جواب دیں گے ، 2014 کا کیس ہے اور مؤکل کو جولائی 2018 میں طلب کیا گیا ، طلبی اس وقت کی جارہی جب انتخابات کا 2ہفتوں بعد انعقاد ہورہا ہے۔

فریال تالپور کی جانب سے بھی جواب میں کہا گیا کہ فریال تالپور پیپلزپارٹی خواتین ونگ کی سربراہ ہیں اور پی ایس 10لاڑکانہ سےانتخابات میں حصہ لے رہی ہیں، الیکشن مہم کی وجہ سے تمام ریکارڈ جمع کرکے جواب دینا ممکن نہیں ، لہذا جواب داخل کرانے کےلیے 31 جولائی تک مہلت دی جائے، وقت دیں انکوائری میں مکمل تعاون کیا جائے۔

گزشتہ روز وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے نے نوٹس کے ذریعے دونوں کو طلب کیا تھا، ایف آئی اے سابق صدرآصف زرداری اور ان کی بہن سے اربوں روپے کی مبینہ ناجائز منتقلی سے متعلق تفتیش کرے گی۔

نوٹس میں کہا گیا تھا کہ وہ ایک جعلی اکاؤنٹ سے ڈیڑھ کروڑ روپے کی رقم منتقلی کے بارے میں بتائیں اور خبردار کیا گیا کہ جان بوجھ کر پیش نہ ہوئےتو ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے گی۔


مزید پڑھیں : آصف علی زرداری اور فریال تالپورکو کل ایف آئی اے نے طلب کرلیا


ایف آئی اے حکام نے بتایا کہ آصف زرداری کی رہائش گاہ بلاول ہاؤس پر کسی نے نوٹس وصول نہیں کیا، جس کے بعد اسے گیٹ پر چسپاں کر دیا گیا جبکہ فریال تالپور کے مینیجر نےنوٹس وصول کرلیا تھا۔

یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے 29 جعلی اکاؤنٹس معاملے کا ازخود نوٹس لیتے ہوئے زرداری اور فریال تالپور کو بارہ جولائی کو طلب کر رکھا ہے جبکہ دونوں کا نام بھی ای سی ایل میں ڈال دیا گیا۔

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے اٹارنی جنرل کی جانب سے جمع کردہ رپورٹ کی بنیاد پر آصف زرداری اور فریال تالپور کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا  حکم جاری کیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق یہ افراد منی لانڈرنگ کیس میں ایف آئی اے کو مطلوب ہیں، آصف زرداری اور فریال تالپور کا نام بھی جعلی اکاونٹس ہولڈرز میں شامل ہے۔

واضح رہے کہ سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور پر ڈیڑھ کروڑ کی غیر قانونی منتقلی کا الزام ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں