The news is by your side.

Advertisement

صدرمملکت عارف علوی کے دستخط کے بعد فنانس بل 20 – 2019 نافذ العمل

اسلام آباد :صدرمملکت عارف علوی کے دستخط کے بعد فنانس بل دوہزارانیس بیس نافذ العمل ہوگیا، ٹیکسوں اور ڈیوٹیز میں رد و بدل کا اطلاق بھی آج سے ہوگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نئےمالی سال کا آج سے آغاز ہوگیا، صدرمملکت ڈاکٹرعارف علوی نے مالیاتی بل دو ہزار انیس، بیس بل پر دستخط کردیئے، مالیاتی بل کی پارلیمنٹ پہلے ہی منظوری دے چکی ہے، مالیاتی بل وزیراعظم نے منظوری کیلئے صدرمملکت کو ارسال کیا تھا ۔

صدرمملکت عارف علوی کے دستخط کے بعد فنانس بل دوہزارانیس بیس آج سے نافذ العمل ہوگیا اور بجٹ میں لئےگئے ٹیکس اقدامات کا اطلاق بھی ہوگیا۔

چینی پر سیلز ٹیکس میں اضافہ ہوا، سیلز ٹیکس آٹھ فیصد سے بڑھا کر سترہ فیصد کردیاگیاہے، جس سے چینی کی فی کلوقیمت میں ساڑھے تین روپے تک  کا اضافہ ہوگا۔

سیمنٹ سیکٹر پر ایکسائزڈیوٹی اورگیس کی قیمتوں میں اضافےسے فی بوری کی قیمت میں پینتس روپے سے زائد کے اضافے کا امکان ہے ، گیس مہنگی ہونے  سے کھاد کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوگا اور کھاد کی فی بوری قیمت دوسودس روپے مہنگی ہوجائےگی۔

پانچ سو انہتر درآمدی اشیا پر ریگیولیڑی ڈیوٹی عائد کی گئی ہے، ان اشیا میں گاڑیاں، آٹو پارٹس، چیز، دہی، ناریل، کاجو، شہد، مشروبات، مچھلی، پان، چھالیہ، پینٹ، گھڑیاں، ٹیبل وئیر، کچن وئیر، انرجی سیور اور دیگر شامل ہیں۔

درآمدی اشیا میں شیمپو، صابن، میک اپ کا سامان اور پرفیوم شامل ہیں۔ درآمدی یارن، کپڑے اورملبوسات پر بھی ریگیولیٹرڈیوٹی لگائی گئی ہے۔

انکم ٹیکس میں دروبدل کااطلاق آج سےہوگا، اب چھ لاکھ سے اوپرآمدن قابل ٹیکس تصورکی جائےگی۔

خیال رہے قومی اسمبلی نے آئندہ مالی سال کے بجٹ کی باقاعدہ منظوری دی تھی  ، بجٹ کا مجموعی حجم آٹھ ہزار دو سو اڑتیس ارب روپے ہے جبکہ اپوزیشن کی تمام ترامیم کثرت رائے سے مسترد ہوگئیں تھیں ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں