The news is by your side.

Advertisement

کورونا وائرس کے کن مریضوں کو موت کا شدید خطرہ لاحق ہوتا ہے؟ ڈاکٹرز نے بتادیا

سیئول : کورونا کے مریضوں کے علاج معالجے پر مامور جنوبی کوریا کے ڈاکٹروں نے بتایا ہے کہ کون سے افراد کوویڈ 19 کے حملے سے زیادہ متاثر ہوتے ہیں۔

اس حوالے سے ینگنم یونیورسٹی میڈیکل سینٹر کے ایک پروفیسر ڈاکٹر آن جون ہانگ نے کہا ہے کہ جنوبی کوریا کے ڈاکٹروں نے کوویڈ 19 سے متعلق سنگین خطرے کے عوامل کا انکشاف کیا ہے۔

پروفیسر آن جون ہانگ نے میڈیا کو بتایا کہ ان ڈاکٹروں نے کورونا مریضوں میں کچھ ایسی علامتیں دیکھیں جس کے بعد انہوں نے یہ بتایا کہ وہ مریض جو پہلے ہی کسی خاص بیماری میں مبتلا ہوں تو کورونا ان پر شدت سے اثر انداز ہوتا ہے۔

دو جون کو کورین میڈیکل سائنس کے میگزین میں شائع ہونے والے ایک مقالے میں جنوبی کورین ڈاکٹروں نے لکھا ہے کہ ذیابیطس، جسمانی درجہ حرارت، کم آکسیجن اور پہلے سے موجود امراض قلب میں مبتلا افراد کوویڈ19 کے حملے بعد انتہائی خطرے کی زد میں آجاتے ہیں۔

طبی ماہرین کورونا مریضوں کے لئے خطرے کے عوامل پر تحقیقات کر رہے ہیں، جس نے چین میں گزشتہ سال کے آخر میں پہلی بار سامنے آنے کے بعد سے اب تک عالمی سطح پر چار لاکھ سے زائد افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

ڈاکٹروں کی ٹیم نے 19 فروری سے 15 اپریل تک جنوبی کوریا کے ایک اسپتال میں 110 کورونا وائرس کے مریضوں کا مشاہدہ کیا، ینگنم یونیورسٹی میڈیکل سینٹر میں 110 مریضوں میں سے 23 میں کوویڈ19 کی سنگین علامات پائی گئیں۔

اطلاعات کے مطابق گزشتہ روز تک جنوبی کوریا میں 45 نئے کیس رپورٹ ہوئے276 اموات کے ساتھ کیسوں کی مجموعی تعداد 11،947ہوگئی ہے۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں کووڈ 19 کے خلاف برسر پیکار فرنٹ لائن پر موجود طبی عملہ بھی بری طرح متاثر ہوا ہے اور مریضوں کی دیکھ بھال کے دوران بڑی تعداد میں ڈاکٹرز، نرسیں اور دیگر عملہ اس وائرس کا شکار ہو چکے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں