The news is by your side.

Advertisement

مولاناصاحب کوچڑھائی کرنی ہےتواسلام آباد پر نہیں ایل اوسی اور بھارت پر کریں، فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد : معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ مولانا صاحب کو ملک،عوام کا نہیں اپنی ذات کا درد ہے ، انھیں چڑھائی کرنی ہے تو ایل اوسی اور بھارت پر کریں ، لیکن وہ اسلام آباد میں چڑھائی پر بضد ہیں۔

تفصیلات کے مطابق معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پوری قوم مظلوم کشمیریوں کی آواز بن کرڈٹی ہوئی ہے ، مولاناصاحب کو چڑھائی کرنی ہے تو ایل اوسی اور بھارت پر کریں ، لیکن وہ اسلام آباد میں چڑھائی پر بضد ہیں۔

فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ مولاناصاحب کو ملک،عوام کا نہیں اپنی ذات کا درد ہے ، ان کو جن جماعتوں پر یقین تھا وہ منافقت کررہی ہیں ، دو سیاسی جماعتیں ان کے کندھوں پر چڑھ کر آگے بڑھتی ہیں۔

معاون خصوصی نے کہا مدرسے کےمعصوم بچوں کو مولاناصاحب کی سیاست کی بھینٹ نہیں چڑھنے دیں گے ، یہ منافقت کی سیاست میں ایک دوسرے کو دھوکا دے رہےہیں ، یہ ایک دوسرےکودھوکادےکر ذاتی مفادات کاتحفظ چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ توقع ہےمولاناصاحب دونوں جماعتوں کے عزائم کو بھانپیں گے، دونوں سیاسی جماعتیں اپنے مقاصد کیلئے کوشاں ہیں، مولاناصاحب جس ایجنڈے پرچل رہے ہیں عوام ان کے ساتھ نہیں، ان کا ایجنڈا دیوانے کا خواب ہے۔

مزید پڑھیں : عمران خان کے خلاف سڑکوں پر نکلنے کا مطلب کرپشن کو لائسنس دینا ہے، فردوس عاشق اعوان

گذشتہ روز جمعیت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی جانب سے آزادی مارچ کی تاریخ کے اعلان پر ردعمل دیتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ ’’مولانا صاحب، اسلام اور قانون کی مخالف سمت میں کھڑے نہ ہوں‘‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ مولانا مدارس کے معصوم بچوں کے سر پر سیاست نہ کریں، معصوم طالب علموں کو سیاسی مفاد کے لیے انسانی ڈھال بنانا جمہوریت نہیں اور عمران خان کے خلاف نکلنے کا مطلب کرپشن کو لائسنس کے مترادف ہے۔

یاد رہے مولانا فضل الرحمان کا پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ’’ملک بھر سے ہمارے قافلے 27 اکتوبر اسلام آباد کے لیے روانہ ہونا شروع ہوں گے‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں