The news is by your side.

Advertisement

کرپشن میں گرفتار افراد سیاسی قیدی کا لیبل لگا کر آنکھوں میں دھول جھونک رہے ہیں: فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد: معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ ماضی کے وزرائے اعظم چادر سے زیادہ پاؤں پھیلاتے رہے.

ان خیالات کا اظہار انھوں نے خصوصی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا. ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم چاہتے ہیں کہ قوم مشکل وقت میں ساتھ دے.

فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ اجلاس میں احتساب سے متعلق اہم پیش رفت ہوئی، وزیراعظم ہاؤس سے اخراجات میں اضافے سے متعلق تردید آچکی ہے، 28 کروڑکے وزیراعظم ہاؤس کے بلزبھی ادا کر رہے ہیں.

فردوس عاشق نے کہا کہ وزیراعظم نے آج کابینہ کواپنی ذات سےمتعلق لیے گئے اقدامات سےآگاہ کیا، بنی گالہ میں بننے والی دیوار ذاتی خرچ سے بنائی گئی۔

مسائل کےحل کے لئےفرنٹ فٹ پرآ کر فیصلے کئے جاتے ہیں، اپوزیشن کے پروپیگنڈے کی وجہ سے اہم امور پر آنکھیں بند نہیں کی جاتیں

شہبازشریف نے45 بلین روپے ذاتی تشہیرپرخرچ کئے، شہبازشریف قوم کو زہر کے ٹیکے لگا کر گئے، شہبازشریف بھائی کے جہازپر سیرو تفریح کرتے رہے، یواین میں نوازشریف، راج کماری مریم صاحبہ بیٹی کو بھی لے گئیں. پنجاب حکومت تنکا تنکا اکٹھا کر کے ان کی عیاشیوں کی قیمت ادا کر رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کرپشن کیسز میں اندرہونے والے افراد سیاسی قیدی کا لیبل لگارہے ہیں، قوم کی آنکھوں میں دھول جھونکی جارہی ہے، منی لانڈرنگ،جعلی اکاؤنٹس میں ملوث رنگے ہاتھوں پکڑےگئے.

انھوں نے کہا کہ بجٹ کے ساتھ ملکی دفاع جڑا ہوا ہے، کل سب نےدیکھا، اسپیکرکوکس طرح یرغمال بنایا گیا، کرمنلز پارلیمنٹ کی راہداری میں گھومنا پھرنا چاہتے ہیں، تو اس کااستحقاق اسپیکرکے پاس ہے. فردوس عاشق نے اپوزیشن پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ آپ کون ہوتے ہیں یہ کہنے والے کہ بجٹ پاس نہیں ہونے دیں گے۔

مزید پڑھیں: اپوزیشن اراکین نے بجٹ سنا اور نہ ہی پڑھا، فردوس عاشق اعوان

ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم اورفارن منسٹرستمبر میں جنرل اسمبلی میں جائیں گے، پاکستان کاوزیراعظم سیون اسٹارہوٹل میں نہیں رہے گا، ہمارے وزیراعظم وہاں کے سفیرکےگھرمیں رہیں گے، بنی گالہ میں بننے والی سیکیورٹی وال پارٹی فنڈ، وزیراعظم نے اپنی آمدن سے بنوائی.

انھوں نے کہا کہ مسائل کےحل کے لئےفرنٹ فٹ پرآ کر فیصلے کئے جاتے ہیں، اپوزیشن کے پروپیگنڈے کی وجہ سے اہم امور پر آنکھیں بند نہیں کی جاتیں، بجٹ نہ منظورکرنےدینے والے، پارلیمنٹ کویرغمال بنانے والے سیاسی قیدی نہیں، اسپیکر سندھ اسمبلی کو نیب نے پکڑا ہے، اس سے استعفا کیوں نہیں مانگتے.

انھوں نے کہا کہ عدالتوں میں جو کرپشن کیس بھگت رہے ہیں، انھیں پولیس اسکواڈ دینے کی حوصلہ شکنی کرنی چاہیے، یہ انکوائری کمیشن ملک کی سمت کا تعین کرے گا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں