The news is by your side.

Advertisement

ٹیکسٹائل انڈسٹری کو سہولیات دیں، انہوں نے 40 ارب کمائے اور ٹیکس بھی دیا: فردوس عاشق اعوان

لاہور: وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ ویلتھ کری ایشن کے لیے کام کر رہے ہیں، ٹیکسٹائل انڈسٹری کو سہولیات دیں، انہوں نے 40 ارب کمائے اور ٹیکس بھی ادا کیے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ ملک مشکل صورتحال سے گزر رہا تھا، وزیر اعظم عمران خان کو مشکل فیصلے کرنا پڑے، ایف اے ٹی ایف کی گرے سے بلیک لسٹ کرنے کی کوشش کی جارہی تھی۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ کوئی بھی ملک قرضوں سے نہیں چلتا، ٹیکس لے کر حکومتیں چلتی ہیں۔ 5 فیصد سے کم لوگوں نے 95 فیصد کا بوجھ اٹھایا ہوا تھا۔ 3 فیصد تنخواہ دار طبقہ تھا جن سے زبردستی ٹیکس لیا جا رہا تھا۔ 10 سال میں ریکارڈ قرضے لیے گئے اس کی وجوہات کے تعین کے لیے کمیشن بنایا۔

انہوں نے کہا کہ قرضہ لینے اور خرچ کرنے کا طریقہ کار متعین کیا جائے، عمران خان کا وزیر اعظم ہاؤس میں رہنا حق تھا لیکن وہ اپنے گھر میں رہے۔ وزیر اعظم ہاؤس کے اخراجات میں 32 فیصد کمی لائی گئی۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ ویلتھ کری ایشن کے لیے کام کر رہے ہیں، ٹیکسٹائل انڈسٹری میں بند صنعتوں کو کھولا گیا۔ ہماری کوشش ہے ملکی ایکسپورٹ بڑھے۔ ٹیکسٹائل انڈسٹری نے کہا سہولتیں دیں 15 ارب ڈالر کی ایکسپورٹ دیں گے۔ گیس و بجلی کے ٹیرف فکس کیے، انہوں نے 40 ارب کمائے، ٹیکس بھی ادا کیے۔

انہوں نے کہا کہ خفیہ اثاثوں کو جانچنے کا طریقہ کار ایف بی آر نے متعارف کروایا ہے، ایف بی آر کے طریقہ کار کے فوائد جلد سامنے آئیں گے۔ وزیر اعظم عمران خان نے کفایت شعاری کے لیے خود کو مثال بنایا۔ وزیر اعظم نے انڈسٹری کی بحالی کے لیے انسپکٹر لیس رجیم کا آغاز کیا۔ صوبوں سے مل کر ٹور ازم پالیسی لا رہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں