The news is by your side.

Advertisement

ملکی تاریخ میں پہلی بار بلیو اکانومی کے بعد بلیو کاربن منصوبے پر کام شروع

اسلام آباد : وفاقی حکومت نے سمندری حدود میں موجود کاربن ویلیو کا تخمینہ لگانے کیلئے عالمی بینک کے تعاون سے مشترکہ اسٹریٹیجی لانچ کر دی ، مینگروز اور سمندری حدود میں موجود کاربن کی مالیت اربوں ڈالرز ہوسکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملکی تاریخ میں پہلی بار بلیو اکانومی کے بعد بلیو کاربن منصوبے کا آغاز کردیا، وزارت ماحولیات اور ورلڈ بینک نے پاکستان میں مشترکہ اسٹرٹیجی لانچ کردی۔

حکومت نے سمندری حدود میں موجود کاربن کی قیمت کاتخمینہ لگانے کافیصلہ کرلیا ہے ، مشیر موسمیاتی تبدیلی ملک امین اسلم کا کہنا ہے کہ پاکستان میں مینگروز اورسمندری حدود میں ریکارڈ اضافہ ہوا۔

ملک امین اسلم نے کہا کہ پاکستان نے ورلڈبینک کےتعاون سے”بلیو کاربن اسٹڈی” لانچ کر دی، مینگروزاورسمندری حدودمیں موجود کاربن کی مالیت اربوں ڈالرہو سکتی ہے۔

بلیوکاربن کےتخمینےپرمشتمل رپورٹ3 ماہ میں موصول ہو جائےگی، منصوبہ وزیراعظم کےکلائمٹ ایکشن وژن کااہم ترین ستون بنےگا، پاکستان میں مینگروزکےرقبےمیں 300 گنا اضافہ ریکارڈ ہواہے۔

حکومت نے ٹین بلین ٹری سونامی پروگرام کے تحت ایک ارب نئے مینگروزدرخت لگانےکااعلان کیا ہے، مشیر موسمیاتی تبدیلی نے کہا کہ ساحلی علاقوں میں ایک ارب مینگروزدرخت لگائیں جائیں گے، مینگروزجنگلات میں اضافے سے زہریلی گیسوں کے اخراج میں کمی لانا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں