The news is by your side.

Advertisement

یورپی ممالک نے بھاری ہتھیار یوکرین پہنچا دیے

جرمنی کی بھاری ہتھیاریوں اور جنگی سازوسامان پر مبنی پہلی کھیپ یوکرین پہنچ گئی۔

یوکرین کے وزیر دفاع اولیکسی رزنیکوف نے کہا ہے کہ جرمن ہاؤٹزر اور دیگر بھاری ہتھیاروں کی پہلی ترسیل یوکرین پہنچ چکی ہے۔

برلن حکومت کا کہنا ہے کہ یوکرین سے وعدے کے مطابق بھاری ہتھیار اور سامان کیف کو بھیج دیا گیا ہے۔
یہ کھیپ ہتھیاروں اور گولہ بارود کی بار بار اپیلوں کے بعد پہنچائی گئی ہے کیونکہ کیف حکومت مشرقی یوکرین میں روس کی فوجی کارروائی کو روکنے کی کوشش کر رہی ہے۔

جرمنی نے خوکار ہتھیار ہاؤٹزر پہنچائے گئے ہیں۔ مئی میں جرمنی نے آرٹلری کے سات نظام بھیجنے کا وعدہ کیا تھا جس میں ہالینڈ کی طرف سے وعدہ کیے گئے پانچ ہووٹزروں کا اضافہ کیا گیا۔

پینزوبٹس 2000 جرمن فوج کے ذخیرے میں سب سے طاقتور توپ خانے کے ہتھیار ہیں جب کہ ہاؤٹزر 40 کلومیٹر (25 میل) دور تک واقع اہداف کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔

یوکرین کے وزیر دفاع اولیکسی ریزنکوف نے اپنے جرمن ہم منصب کرسٹین لیمبریچٹ اور ڈچ وزیر دفاع کاجسا اولونگرین کا شکریہ ادا کرتے اس ترسیل کو "یوکرین کی حمایت میں بین الاقوامی تعاون کی ایک مثال” قرار دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں