The news is by your side.

Advertisement

آسٹریلیا کی پہلی براہ راست پرواز برطانیہ پہنچ گئی

سڈنی: آسٹریلیا کی ہوائی کمپنی کنٹاس نے سیّاحوں کی سہولت کے لیے پہلی براہ راست پرواز اتوار کی صبح برطانیہ پہنچا دی۔

تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا سے برطانیہ کا چار دن میں طے ہونے والا سفر ہوائی کمپنی کنٹاس ایئر لائن کی بدولت اب صرف 17 گھنٹوں میں سمٹ گیا ہے۔ کنٹاس ایئرلائن آسٹریلیوی ریاست پرتھ سے مسافروں کو برطانیہ لے جانے والی پہلی براہ راست پرواز اتوار کی صبح لندن پہنچ گئی۔

ہوائی کمپنی کا بوئنگ 787 مسافر بردارطیارہ بغیررُکے چودہ ہزارکیلومیٹرکا فاصلہ17 گھنٹوں میں طے کر کے لندن کے مقامی وقت کے مطابق اتوارکوصبح سویرے 5 بچے لندن پہنچا ہے۔

نصف صدی پہلے آسٹریلیا سے برطانیہ کا سفر جو سمندر کے راستے کبھی چھ ہفتوں کا ہوا کرتا تھا اب صرف 17 گھنٹوں کی ایک فلائٹ میں سمٹ گیا ہے۔

ہوائی کمپنی کنٹاس کے چیف ایگریکٹو کا کہنا تھا کہ کمپنی نے’1947 میں آسٹریلیا سے لندن تک کا یہ کینگرو روٹ متعارف کروایا تھا۔ اس وقت طیارے کو لندن پہنچے میں چار دن لگتے تھے اور اس دوران 9 مقامات پر قیام کرنا پڑتا تھا۔

سڈنی یونیورسٹی سے منسلک تحقیقاتی عملے کنٹاس ایئرلائن کی اس افتتاحی پرواز میں موجود افراد میں سے 20 مسافروں کا طبی مشاہدہ کیا گیا ہے تاکہ معلوم کیا جا سکے کہ سفر کے دوران ان کے جسم کا ردعمل کیا ہوتا ہے جس میں درجہ حرارت بھی شامل ہوگا جوکہ نیند کے لیے بہت ضروری ہے۔

انٹرنیشنل ایئرٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن کے مطابق یہ آسٹریلیا سے لندن تک کا یہ سفر دنیا کی دوسری طویل ترین پرواز تھی۔ فی الحال دنیا کی طریل ترین پرواز کا اعزاز قطر ایئر ویز کو حاصل ہے جو دوہا سے آکلینڈ تک 14 ہزار 529 کلومیٹر کا سفر طے کرتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں